Sunday , December 17 2017
Home / شہر کی خبریں / موسیٰ ندی صفائی پراجکٹ،21 مارچ تک ایکشن پلان پیش کرنے ہائیکورٹ کی ہدایت

موسیٰ ندی صفائی پراجکٹ،21 مارچ تک ایکشن پلان پیش کرنے ہائیکورٹ کی ہدایت

حیدرآباد 16 مارچ (سیاست نیوز) ہائیکورٹ حیدرآباد نے تلنگانہ حکومت سے کہا ہے کہ وہ موسیٰ ندی حیدرآباد کو پاک و صاف اور خوبصورت بنانے سے متعلق اپنا ایکشن پلان 21 مارچ تک پیش کردے۔ کارگذار چیف جسٹس دلیپ بی بھوسلے اور جسٹس پی نوین راؤ پر مشتمل بنچ نے مفاد عامہ کی ایک درخواست کی سماعت کرتے ہوئے یہ ہدایت دی۔ درخواست گذار ایم پدمنابھ ریڈی فورم فار گڈ گورننس نے عدالت سے استدعا کی تھی کہ وہ حکومت کو ہدایت دے کہ موسیٰ ندی کو تیزی سے پاک و صاف کرنے اور خوبصورت بنانے کے اقدامات کرے۔ درخواست گذار کی وکیل بی رچنا ریڈی نے عدالت کو بتایا کہ سیوریج ٹریٹمنٹ پلانٹس کی تعمیر کے لئے چار سو کروڑ روپئے خرچ کئے جانے کے باوجود موسیٰ ندی میں آلودگی کم کرنے میں کوئی مدد نہیں ملی۔ وکیل نے نشاندہی کی کہ 2009 ء میں پراجکٹ کا پہلا مرحلہ ناکام ہونے کے بعد مرکزی حکومت نے حیدرآباد میٹرو واٹر ورکس سیوریج بورڈ، گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن اور حیدرآباد میٹرو پولیٹن ڈیولپمنٹ اتھاریٹی کی طرف سے مشترکہ طور پر ایکشن پلان کی تجویز پیش کی۔ اس تجویز پر عمل نہیں کیا گیا اور ان محکمہ جات نے الگ الگ پلان بنائے۔ وکیل نے نشاندہی کی کہ مرکز نے پراجکٹ کے 70 فیصد اخراجات برداشت کرنے کا پیشکش کیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT