Friday , November 17 2017
Home / شہر کی خبریں / موسی ندی ترقیاتی پراجکٹ کا اواخر سال تک آغاز

موسی ندی ترقیاتی پراجکٹ کا اواخر سال تک آغاز

۔32 سیوریج ٹریٹمنٹ پلانٹس اور 72چیک ڈیمس کی تجویز
حیدرآباد۔/23اگسٹ، ( پی ٹی آئی) موسی ندی ترقیاتی پراجکٹ کا پہلا مرحلہ جاریہ سال کے ختم تک شروع کیا جائیگا۔ صدرنشین موسی ریور فرنٹ ڈیولپمنٹ کارپوریشن پریم سنگھ راتھوڑ نے آج یہ بات بتائی۔ انہوں نے کہا کہ موسی ندی کو فروغ دینے کیلئے 1665 کروڑ روپئے کا منصوبہ تیار کیا جارہا ہے۔ موسی ندی دراصل کرشنا ندی کا ایک حصہ ہے جو حیدرآباد سے گزرتی ہے لیکن اب یہ ملک کی بدترین آلودہ ندیوں میں ایک ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ہم جاریہ سال کے اواخر میں یہ پراجکٹ شروع کریں گے اور اسے مقررہ وقت میں ہی پورا کرلیا جائے گا۔ پریم سنگھ راتھوڑ نے بتایا کہ نامور فرمس کی خدمات حاصل کی جارہی ہیں اور اس پراجکٹ کی مقررہ شیڈول کے تحت تکمیل ہوگی لیکن انہوں نے اس بارے میں وقت کی صراحت نہیں کی۔ انہوں نے بتایا کہ ندی کے اطراف 32 سیوریج ٹریٹمنٹ پلانٹس قائم کرنے کا منصوبہ ہے۔ اس کے علاوہ 72 چیک ڈیمس کی بھی تجویز ہے تاکہ سال بھر موسی ندی میں پانی کی موجودگی یقینی ہوسکے۔وہ آج نوتشکیل شدہ موسی ریور فرنٹ ڈیولپمنٹ کارپوریشن کے دفتر کے رسمی افتتاح کے بعد خطاب کررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ ندی کی صفائی، اطراف واکناف پیدل چلنے کیلئے راہداری، بریجس، واٹر پول اور دیگر کئی تعمیرات کا منصوبہ ہے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے بتایا کہ موسی ندی کے اطراف قابضین ہیں جن سے قانون کے مطابق نمٹا جائے گا۔ کارپوریشن عہدیداروں کے بموجب حکومت تلنگانہ اس پراجکٹ کیلئے توقع ہے کہ 500کروڑ روپئے جاری کرے گی جبکہ مابقی رقم بینکوں اور دیگر مالیاتی اداروں سے حاصل کی جائے گی۔ قبل ازیں وزیر داخلہ این نرسمہا ریڈی نے دفتر کا افتتاح کیا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT