Monday , November 20 2017
Home / شہر کی خبریں / مولانا ذاکر حسین غوری اور مولانا حامد احمد کو کلین چٹ

مولانا ذاکر حسین غوری اور مولانا حامد احمد کو کلین چٹ

اسلحہ کی منتقلی کے الزام میں گرفتار شخص کا دعویٰ غلط ثابت
حیدرآباد 11 اکٹوبر (سیاست نیوز) اسلحہ کی منتقلی کے الزام میں گرفتار ایک شخص سے پوچھ تاچھ کے سلسلہ میں حیدرآباد پہونچنے والی دہلی پولیس کے اسپیشل سیل نے حیدرآباد سے تعلق رکھنے والے دو مدرسوں کے ذمہ داران کو کلین چٹ دے دی۔ رحمت پاشاہ جس کا تعلق گولکنڈہ علاقہ سے بتایا جاتا ہے کہ حال ہی میں دہلی پولیس کے اسپیشل سیل نے اترپردیش سے اسلحہ منتقلی کے دوران دہلی ریلوے اسٹیشن پر گرفتار کرلیا تھا اور اُس کے قبضہ سے اسلحہ برآمد کیا تھا۔ رحمت کی تفتیش کے دوران اُس نے مفتی ذاکر حسین نوری جو مدرسہ طیبۃ الرضاء چنتل میٹ (راجندر نگر) اور مولانا حافظ احمد حسن نوری و مدرسہ غریب نواز واقع نلہ کنٹہ سے مبینہ تعلقات کا دعویٰ کیا تھا۔ جس کی بنیاد پر دہلی پولیس حیدرآباد پہونچ کر کمشنر ٹاسک فورس کی مدد سے مذکورہ مدرسوں کے دونوں ذمہ داران کو ٹاسک فورس آفس طلب کرتے ہوئے گزشتہ تین دنوں سے پوچھ تاچھ کی جبکہ پولیس کو کیس میں پیشرفت نہ ہونے اور گرفتار شخص کا دعویٰ غلط ہونے پر رحمت پاشاہ کو بذریعہ فلیٹ حیدرآباد منتقل کیا گیا۔ اسپیشل سل کے پولیس عہدیداروں نے مذکورہ دونوں افراد کو رحمت کے روبرو پوچھ تاچھ کی جس کے بعد پولیس نے اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے مولانا ذاکر حسین نوری اور مولانا حافظ احمد حسن نوری کو کلین چٹ دے دی۔ بعدازاں رحمت کو دوبارہ دہلی منتقل کردیا گیا۔ واضح رہے کہ دہلی پولیس کی اس کارروائی کے بعد مدرسہ کے ذمہ داران میں تفتیش کی لہر دوڑ گئی تھی جس پر مجلس بچاؤ تحریک کے سابق کارپوریٹر مسٹر امجد اللہ خان خالد نے اس سلسلہ میں نمائندگی کرتے ہوئے دونوں مدرسوں کا معائنہ کیا تھا اور پولیس کی جانب سے کسی بھی قسم کی زیادتی پر انتباہ دیا تھا۔ط

TOPPOPULARRECENT