Saturday , June 23 2018
Home / ہندوستان / مچھلیوں کے علاج کیلئے ملک کے پہلے ہاسپٹل کا 2015 میں قیام

مچھلیوں کے علاج کیلئے ملک کے پہلے ہاسپٹل کا 2015 میں قیام

کولکتہ۔/24اکٹوبر، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ملک کا پہلا ایسا ہاسپٹل جہاں مچھلیوں کو لاحق بیماریوں کا علاج کیا جائے گا، 2015ء کے وسط میں کولکتہ میں قائم کیا جائے گا۔ دریں اثناء سینئر سائینسدان ٹی جے ابراہام جو اس پراجکٹ کے روح رواں تصور کئے جارہے ہیں نے میڈیا کو بتایا کہ مذکورہ پراجکٹ پر کام کا آغاز ہوچکا ہے۔ انہوں نے ایک دلچسپ بات بتائی کہ ہ

کولکتہ۔/24اکٹوبر، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ملک کا پہلا ایسا ہاسپٹل جہاں مچھلیوں کو لاحق بیماریوں کا علاج کیا جائے گا، 2015ء کے وسط میں کولکتہ میں قائم کیا جائے گا۔ دریں اثناء سینئر سائینسدان ٹی جے ابراہام جو اس پراجکٹ کے روح رواں تصور کئے جارہے ہیں نے میڈیا کو بتایا کہ مذکورہ پراجکٹ پر کام کا آغاز ہوچکا ہے۔ انہوں نے ایک دلچسپ بات بتائی کہ ہندوستا میں مچھلیوں کو کم و بیش 50 تا 60 اقسام کی بیماریاں لاحق ہوتی ہیں اور شاید یہی وجہ ہے کہ مغربی بنگال مچھلیوں کی پیدائش میں پہلا مقام کھوچکا ہے کیونکہ 10 تا 20 فیصد مچھلیاں یہاں مختلف بیماریوں کا شکار ہوکر مرگئیں۔ اپنی بات جاری رکھتے انہوں نے کہا کہ بیرونی ممالک میں ایسے ہاسپٹلس کا پایا جانا ایک عام بات ہے۔

یاد رہے کہ ٹی جے ابراہام مغربی بنگال یونیورسٹی برائے انیمل اینڈ فشری سائنسس میں ایک سینئر فش مائیکرو بیالوجسٹ کی حیثیت سے برسر کار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہاسپٹل کے قیام کے بعد مچھلی پالن کرنے والوں کو اب مچھلیوں کے مرنے کا خوف نہیں ہوگا بلکہ اس بات کو بھی یقینی بنایا جاسکے گاکہ مچھلی کھانے والوں کو صحت مند مچھلی مل سکے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ ہاسپٹل میں شیشوں کے 50اکوائریم ہوں گے جبکہ 25 دائرہ نما پانی کے حوض ہوں گے جس میں فی کس 500 لیٹر پانی کی گنجائش ہوگی ان حوضوں میں بیمار مچھلیوں کو رکھا جائے گا اور ان کا علاج کیا جائے گا۔ علاوہ ازیں ہاسپٹل میں ایک علحدہ پیتھالوجیکل لیاب بھی ہوگا جہاں مچھلیوں کی مختلف بیماریوں کی تشخیص عمل میں آئے گی جس کے بعد مچھلی پالن کرنے والوں کو مختلف ادویات کے بارے میں خصوصی ہدایت دی جائے گی کہ کس طرح انہیں فلاں فلاں دوا یا غذا مچھلیوں کو کھلانا ہے۔ اس کے بعد مچھلیوں کو ان حوضوں سے نکال لیا جائے گا اور ان کے مالکین کے حوالے کردیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT