Friday , November 24 2017
Home / شہر کی خبریں / مکہ مسجد میں نئے سی سی کیمروں کی تنصیب کے اندرون چند گھنٹے ناکارہ

مکہ مسجد میں نئے سی سی کیمروں کی تنصیب کے اندرون چند گھنٹے ناکارہ

43 اہم مقامات پر غیر کارکرد ، مسجد کی سیکوریٹی کی لاپرواہی مسلسل برقرار
حیدرآباد۔/8جون، ( سیاست نیوز) تاریخی مکہ مسجد کی سیکورٹی کے سلسلہ میں حکام کی لاپرواہی مسلسل برقرار ہے۔ گزشتہ 6 ماہ سے مکہ مسجد کے سی سی ٹی وی کیمرے ناکارہ ہوچکے تھے اور آخر کار مسجد میں 43 نئے کیمرے نصب کئے گئے جن کا افتتاح ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی کے ہاتھوں منگل کے دن عمل میں آیا لیکن افسوس کہ دوسرے ہی دن سے کیمروں کی کارکردگی متاثر ہوگئی۔ بتایا جاتا ہے کہ نصب کئے گئے 43 کیمروں میں کئی اہم مقامات کے کیمرے کام نہیں کررہے ہیں جس کے لئے تکنیکی وجوہات کو ذمہ دار قرار دیا جارہا ہے۔ ہونا تو یہ چاہیئے تھا کہ پہلے ہی تمام کیمروں کی کارکردگی کا جائزہ لینے کے بعد ہی افتتاحی تقریب منعقد کی جاتی۔ بتایا جاتا ہے کہ کئی کیمرے کنکشن اور دیگر تکنیکی دشواریوں کا شکار ہوچکے ہیں جس کے باعث مکہ مسجد کے تمام علاقے کیمرے کی نظروں میں نہیں ہیں۔ مکہ مسجد میں سیکورٹی کے سلسلہ میں زائد جوانوں کو تعینات کیا گیا لیکن مسجد کے اطراف واکناف کے حدود میں غیر سماجی عناصر کی سرگرمیوں کو روکنے کیلئے کیمروں کی تنصیب ناگزیر ہوچکی تھی۔ سیاحوں کے بھیس میں غیر سماجی عناصر مسجد کے عقبی حصہ میں دکھائی دے رہے تھے۔ ان تمام مقامات کو کیمروں کے دائرے میں لانے کیلئے 43 کیمرے نصب کئے گئے لیکن بتایا جاتا ہے کہ کنٹرول روم ان کیمروں کی گنجائش کا احاطہ کرنے سے قاصر ہے لہذا کئی کیمروں کی کارکردگی کا ابھی تک صرف ٹسٹ کیا جارہا ہے۔ کیمروں کے نگرانکار افراد کا کہنا ہے کہ مکمل 43 کیمروں کو کارکرد ہونے کیلئے وقت لگ سکتا ہے۔ مکہ مسجد کے سلسلہ میں حکومت کی جانب سے سابق میں کئے گئے بعض اعلانات پر ابھی تک عمل آوری نہیں کی گئی۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے سابق میں اعلان کیا تھا کہ مکہ مسجد کو شاہی مسجد کا درجہ دیتے ہوئے ملازمین کی تنخواہیں دوگنی کردی جائیں گی لیکن آج تک اس سلسلہ میں کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔ مسجد کیلئے ایک اور اہم مسئلہ ملازمین اور ہوم گارڈز کی تنخواہوں کی بروقت عدم ادائیگی ہے۔ ماہ مئی کی تنخواہ ابھی تک جاری نہیں کی گئی جبکہ اپریل کی تنخواہ 18 مئی کو جاری کی گئی تھی۔ دیگر سرکاری محکمہ جات کی طرح مکہ مسجد کے ملازمین کو بھی ہر ماہ کی پہلی تاریخ کو تنخواہیں ادا کی جانی چاہیئے۔ رمضان المبارک کا پہلا دہا ختم ہوچکا ہے لیکن ابھی تک مئی کی تنخواہ ملازمین کو جاری نہیں کی گئی۔ مسجد کے انتظامات کے سلسلہ میں ملازمین کے تقررات کا تیقن دیا گیا تھا لیکن اس سلسلہ میں کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔ اس قدر وسیع و عریض مسجد کیلئے صفائی عملے کی تعداد بمشکل 10 پر مشتمل ہے جبکہ مزید 10 ملازمین کی سخت ضرورت ہے۔ مکہ مسجد کے مصلیوں کی شکایت ہے کہ اہم شخصیتوں کے دوروں کے موقع پر صرف اعلانات کئے جاتے ہیں لیکن بعد میں عمل آوری پر کوئی توجہ نہیں دی جاتی جس کے نتیجہ میں مسجد کے مسائل جوں کے توں برقرار ہیں۔

TOPPOPULARRECENT