Thursday , October 18 2018
Home / Top Stories / مکہ مسجد کیس : تمام ملزمین کو بری کرنے والا جج بی جے پی میں شمولیت کا خواہاں

مکہ مسجد کیس : تمام ملزمین کو بری کرنے والا جج بی جے پی میں شمولیت کا خواہاں

جج رویندر ریڈی کی امیت شاہ سے ملاقات ، پارٹی کیلئے کام کرنے کی خواہش کا اظہار
حیدرآباد۔ 22 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) حیدرآباد کی ایک میٹرو پولیٹن سیشنس جج جو مکہ مسجد بم دھماکوں کے مقدمہ کے تمام ملزمین کو بری کئے جانے کے فوری بعد مستعفی ہوگئے تھے، اب حکمراں بی جے پی میں شامل ہونا چاہتے ہیں۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق چوتھے ایڈیشنل میٹرو پولیٹن سیشنس جج کے رویندر ریڈی نے بی جے پی کے صدر امیت شاہ سے 14 ستمبر کو ان کے دورۂ حیدرآباد کے موقع پر ملاقات کی اور ان کے ساتھ کام کرنے کی خواہش کا اظہار کیا۔ تاریخی مکہ مسجد میں 9 سال قبل ایک بم دھماکہ کے سبب 9 مصلیان جاں بحق ہوگئے تھے۔ اس مقدمہ کے جج رویندر ریڈی پر 16 اپریل 2018ء کو بشمول سوامی اسیمانند تمام پانچ ملزمین کو بری کردیا جو تمام ایک انتہا پسند ہندو تنظیم کے کارکن بھی تھے۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ رویندر ریڈی کے فیصلے کے اعلان کے چند گھنٹوں بعدشخصی وجوہات کی بناء پر مستعفی ہونے کا اعلان کرتے ہوئے قانونی و سیاسی حلقوں کو حیرت و اَچنبہ میں ڈال دیا تھا۔ اس مقدمہ میں 10 ملزم تھے لیکن این آئی اے نے صرف 5 کے خلاف فردِ جرم عائد کیا تھا۔ دائیں بازو کے ان انتہا پسند ہندو کارکنوں میں سوامی اسیمانند، ویریندر گپتا، لوکیش شرما ، بھارت موہن لال رائیٹور عرف بھارت بھائی ، راجیندر چودھری اور کئی دیگر کے خلاف الزامات وضع کئے گئے تھے اور ان تمام کے منسوبہ الزامات سے بری کردیا گیا تھا۔ سوامی اسیمانند جو گجرات سے تعلق رکھتا ہے، ونواس کلیان آشرم کا سربراہ سے قبل ازیں اجمیر دھماکہ کیس میں بری کیا گیا تھا اور 2014ء کے سمجھوتہ ایکسپریس دھماکہ کیس کے مقدمہ میں فی الحال ضمانت پر رہا ہے۔ دویندر گپتا بہار سے تعلق رکھنے والا آر ایس ایس کا پرچارک ہے اور لوکیش شرما، مدھیہ پردیش سے تعلق رکھنے والا آر ایس ایس پرچارک ہے۔
گائے کے پیشاب اور گوبر سے صابن اور فیشیل پیاک کی فروخت
متھرا۔ 22 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) گائے کے پیشاب اور گورنر سے تیار شدہ صابن، فیس پیاک و چہرے صاف کرنے والے ٹشوز شامپو اور ادویات موبائیل فون ؍ کمپیوٹر کے ایک کلک پر دستیاب ہوں گی کیونکہ آر ایس ایس کی مدد سے چلائے جانے والے ادارہ نے کہا ہے کہ یہ تمام اشیاء اب ای۔کامرس کے سرکردہ ادارہ امیزان انڈیا کے ذریعہ فروخت کی جائے گی۔

TOPPOPULARRECENT