Sunday , December 17 2017
Home / شہر کی خبریں / مکہ مسجد کے انتظامات کو موثر بنانے نئے سپرنٹنڈنٹ کا تقرر

مکہ مسجد کے انتظامات کو موثر بنانے نئے سپرنٹنڈنٹ کا تقرر

مکانات اور ملگیات کے کرایہ کا باقاعدہ حساب کتاب رکھنے کی پابندی
حیدرآباد۔/17ڈسمبر، ( سیاست نیوز) تاریخی مکہ مسجد کے انتظامی معاملات کو بہتر بنانے محکمہ اقلیتی بہبود نے توجہ مرکوز کی ہے۔ مسجد کے تحت موجود مکانات اور ملگیات کے تحفظ اور کرایہ کے بارے میں باقاعدہ حسابات کی تیاری اور مسجد کے ملازمین کی تعداد میں اضافہ حکومت کے زیر غور ہے۔ سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل نے ریٹائرڈ ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ پولیس ایم اے قدیر صدیقی کو مکہ مسجد کا نیا سپرنٹنڈنٹ مقرر کیا اور انہیں ذمہ داری دی گئی ہے کہ وہ مسجد سے متعلق تمام اُمور کی جانچ کرتے ہوئے حکومت کو رپورٹ پیش کریں۔ سکریٹری اقلیتی بہبود نے بتایا کہ وہ مسجد میں مدرستہ الحفاظ کے احیاء کے خواہاں ہیں جو گزشتہ کئی برسوں سے بند ہوچکا ہے۔ اس مدرسہ کے احیاء کے ذریعہ حفاظ کرام کی تیاری اور دینی تعلیم کا انتظام کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ مسجد کے تحت موجود ملگیات اور مکانات کے کرایوں کے سلسلہ میں حکومت کو کئی شکایات موصول ہوئی ہیں۔ 4 لاکھ 50ہزار سے زائد رقم کے بیجا استعمال کا معاملہ منظر عام پر آیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسجد کے ذمہ داروں نے کرایہ کیلئے باقاعدہ اکاؤنٹ کھولنے کے بجائے اپنی مرضی کے مطابق رقم کو خرچ کرلیا اور محکمہ اقلیتی بہبود سے اس کی اجازت بھی حاصل نہیں کی گئی۔ لہذا گزشتہ کئی برسوں سے مکانات اور ملگیات کے کرایہ کی رقم کا بیجا استعمال ہورہا ہے۔ سکریٹری اقلیتی بہبود نے بتایا کہ سابق پولیس عہدیدار کے ذریعہ تمام معاملات کی جانچ کرائی جائے گی اور خاطیوں کے خلاف سخت کارروائی ہی نہیں بلکہ رقم کی ریکوری کی جائے گی۔ انہوں نے بتایا کہ مکہ مسجد اور شاہی مسجد کے ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ کی تجویز حکومت کو روانہ کی گئی ہے۔ اس کے علاوہ عملے کی تعداد میں اضافہ کیا جائے گا۔ انہوں نے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ وہ خطیب مکہ مسجد اور امام کی میعاد میں توسیع سے متعلق فائیل فوری پیش کریں۔ توقع ہے کہ اندرون دو یوم میعاد میں توسیع کے احکامات جاری کردیئے جائیں گے۔ مکہ مسجد کی چھت کی تعمیر و مرمت اور مقبرہ کی تزئین نو کیلئے بھی حکومت سے سفارش کی جائے گی۔ آرکیالوجیکل سروے آف انڈیا کے ماہرین کے ذریعہ اس کام کی تکمیل کا منصوبہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسجد سے متعلق تمام اُمور پر سختی سے نگرانی کیلئے نئے سپرنٹنڈنٹ کو ہدایت دی گئی ہے جس کے تحت شام کے اوقات میں مسجد کو تفریحی مقام کے طور پر استعمال کرنے کی شکایات کا بھی ازالہ کیا جائے گا۔ اس کے علاوہ ہوم گارڈز کی  باقاعدہ حاضری کو یقینی بنایا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT