Wednesday , November 22 2017
Home / شہر کی خبریں / مکہ مسجد کے بجٹ کی اجرائی کیلئے اقدامات

مکہ مسجد کے بجٹ کی اجرائی کیلئے اقدامات

ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی کا ملازمین کو تیقن
حیدرآباد۔/25اگسٹ، ( سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر تلنگانہ محمد محمود علی نے مکہ مسجد کے ملازمین کی تنخواہوں، مخلوعہ جائیدادوں پر تقررات اور مسجد کی نگہداشت کے سلسلہ میں بجٹ کی اجرائی کے اقدامات کا تیقن دیا ہے۔ ڈپٹی چیف منسٹر کی کل مکہ مسجد آمد کے موقع پر ملازمین مکہ مسجد نے اپنے مسائل سے واقف کرایا۔ مکہ مسجد کی چھت کی زبوں حالی اور باتھ رومس کی تعمیر کی ضرورت سے واقف کرایا گیا۔ عہدیداروں نے بتایا کہ جاریہ سال کے بجٹ میں مکہ مسجد اور شاہی مسجد کیلئے کوئی علحدہ بجٹ مختص نہیں کیا گیا جس کے سبب تنخواہوں کی ادائیگی کا مسئلہ پیدا ہوچکا ہے۔ گزشتہ تین ماہ کی تنخواہوں کی عدم ادائیگی کے بعد اقلیتی فینانس کارپوریشن سے 18لاکھ روپئے بطور قرض حاصل کئے گئے تھے جس کے بعد تنخواہیں جاری کی گئیں۔ موجودہ صورتحال میں محکمہ اقلیتی بہبود آئندہ ماہ ملازمین کی تنخواہوں کی ادائیگی کے موقف میں نہیں ہے۔ اگر جاریہ ماہ کے اختتام سے قبل حکومت بجٹ جاری نہیں کرتی تو ملازمین کی تنخواہوں کی ادائیگی نہیں ہوپائے گی۔ ملازمین کے علاوہ سیکورٹی ڈیوٹی پر تعینات ہوم گارڈز تنخواہ سے محروم رہیں گے۔ ڈائرکٹر اقلیتی بہبود جلال الدین اکبر نے محکمہ فینانس کو مکہ مسجد کے ملازمین کی تنخواہوں، نئے باتھ رومس کی تعمیر اور نگہداشت کے سلسلہ میں 3کروڑ روپئے کی اجرائی کی تجویز پیش کی ہے۔ انہوں نے تمام ضروریات کی تفصیلات کے ساتھ محکمہ فینانس کو مکتوب روانہ کیا لیکن گزشتہ دو ماہ سے محکمہ فینانس اس پر کارروائی سے گریز کررہا ہے۔ دوسری طرف مسجد کی چھت کی فوری مرمت کیلئے ایک کروڑ 75لاکھ روپئے کا تخمینہ مقرر کیا گیا، اس رقم کی اجرائی کیلئے اقلیتی بہبود کے عہدیدار محکمہ فینانس کے دفتر کے چکر کاٹ رہے ہیں۔ حیرت تو اس بات پر ہے کہ محکمہ کے اعلیٰ عہدیدار بجٹ کی اجرائی کیلئے بارہا نمائندگی کررہے ہیں لیکن حکومت کی سطح پر محکمہ فینانس کو بجٹ کی اجرائی کی ہدایت نہیں دی گئی۔ محکمہ فینانس کے عہدیدار کسی نہ کسی بہانے بجٹ کی اجرائی سے گریز کررہے ہیں۔ مکہ مسجد کے ملازمین کی تنخواہوں کے علاوہ مسجد کے عملے کی تعداد میں اضافہ ناگزیر ہے۔ تقریباً 8 عہدے مخلوعہ ہیں اور ان پر فوری تقررات ضروری ہیں۔ ملازمین مکہ مسجد نے ڈپٹی چیف منسٹر کو تمام مسائل سے واقف کرایا جس پر انہوں نے تیقن دیا کہ وہ بہت جلد اعلیٰ عہدیداروں کے ساتھ اجلاس منعقد کرتے ہوئے تمام مسائل کی یکسوئی کریں گے۔ مکہ مسجد کے نئے باتھ رومس کی تعمیر ناگزیر ہیں کیونکہ موجودہ باتھ رومس کی حالت انتہائی ابتر ہوچکی ہے۔

TOPPOPULARRECENT