Tuesday , December 18 2018

مہاتما گاندھی پر ہجویانہ نظم کی اشاعت

نئی دہلی ۔ 14 ۔ مئی : ( سیاست ڈاٹ کام) : سپریم کورٹ نے آج ایک بینک ملازم کی ایک عرضی کو مسترد کردیا جس میں انہوں نے سال 1994 میں ایک میگزین میں مہاتما گاندھی پر فحش اور مخرب اخلاق نظم شائع کرنے پر ان کے خلاف الزامات وضع کرنے کو چیلنج کیا تھا ۔ وہ اس میگزین کے ایڈیٹر ہیں جسٹس دیپک مصرا اور جسٹس پروفلاسی پنت پر مشتمل بنچ نے کہا کہ مہاتما گاندھ

نئی دہلی ۔ 14 ۔ مئی : ( سیاست ڈاٹ کام) : سپریم کورٹ نے آج ایک بینک ملازم کی ایک عرضی کو مسترد کردیا جس میں انہوں نے سال 1994 میں ایک میگزین میں مہاتما گاندھی پر فحش اور مخرب اخلاق نظم شائع کرنے پر ان کے خلاف الزامات وضع کرنے کو چیلنج کیا تھا ۔ وہ اس میگزین کے ایڈیٹر ہیں جسٹس دیپک مصرا اور جسٹس پروفلاسی پنت پر مشتمل بنچ نے کہا کہ مہاتما گاندھی جیسی تاریخ ساز اور قابل احترام شخصیتوں کے خلاف غیر شائستہ زبان استعمال کرنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی ۔ سپریم کورٹ بنچ نے ممبئی ہائی کورٹ کے اس فیصلہ کو برقرار رکھا ہے کہ غیر اخلاقی میگزین کی فروخت اور اشاعت کے الزام کو کالعدم قرار نہیں دیا جاسکتا جو کہ ملزم دیوی داس رامچندرا تلجا پورکر کے خلاف وضع کئے گئے ہیں اور کہا کہ اظہار خیال کی آزادی کا مطلب یہ نہیں ہے کہ حد ادب و اخلاق سے آگے گذر جائے ۔ مسٹر تلجا پورکر 1994 میں بینک آف مہاراشٹرا ایمپلائز یونین کی میگزین کے ایڈیٹر تھے ۔ ان سے بنچ نے کہا کہ زیرین عدالت میں سماعت کے دوران اپنا نقطہ نظر پیش کریں ۔ تاہم عدالت نے میگزین کے پرنٹر اور پبلیشر کے خلاف فوجداری کارروائی کو کالعدم کردیا ۔ جس میں مراٹھی شاعر وسنت دتاتریہ گورجر کی نظم شائع کی گئی تھی اور کہا کہ انہوں نے پہلے ہی غیر مشروط معذرت خواہی کرلی ہے ۔ بتایا جاتا ہے کہ مراٹھی شاعر نے گاندھی جی پر ہجویہ نظم لکھی تھی جسے میگزین میں شائع کرنے پر تنازعہ پیدا ہوگیا تھا ۔۔

TOPPOPULARRECENT