Saturday , January 20 2018
Home / سیاسیات / مہاراشٹرا اسمبلی کے سرمائی سیشن کا آج سے آغاز

مہاراشٹرا اسمبلی کے سرمائی سیشن کا آج سے آغاز

ناگپور۔ 7؍دسمبر (سیاست ڈاٹ کام)۔ مہاراشٹرا لیجسلیچر اسمبلی کے سرمائی سیشن کا کل سے آغاز ہورہا ہے۔ اس سیشن میں اپوزیشن کی جانب سے زبردست ہنگامہ آرائی کا امکان ہے۔ حکمراں اتحادی گروپ بی جے پی۔ شیوسینا کو کانگریس اور این سی پی کے ارکان کی شدید مخالفت کا سامنا کرنا پڑے گا۔ اپوزیشن نے مہاراشٹرا میں کسانوں اور خشک سالی جیسے مسائل پر حک

ناگپور۔ 7؍دسمبر (سیاست ڈاٹ کام)۔ مہاراشٹرا لیجسلیچر اسمبلی کے سرمائی سیشن کا کل سے آغاز ہورہا ہے۔ اس سیشن میں اپوزیشن کی جانب سے زبردست ہنگامہ آرائی کا امکان ہے۔ حکمراں اتحادی گروپ بی جے پی۔ شیوسینا کو کانگریس اور این سی پی کے ارکان کی شدید مخالفت کا سامنا کرنا پڑے گا۔ اپوزیشن نے مہاراشٹرا میں کسانوں اور خشک سالی جیسے مسائل پر حکومت کے خلاف محاذ آرائی کا اِرادہ کیا ہے۔ مزید براں کانگریس۔ این سی پی جس نے تین میعادوں تک ریاست میں حکمرانی کی ہے، سرکاری نظم و نسق کے نشیب و فراز سے واقف بھی ہے تو مقررہ وزراء کو نشانہ بنانے کے لئے آسانی سے اپنا موقع تلاش کرے گی۔ نئی حکومت میں کئی نئے چہرے ہیں۔ انھیں اپوزیشن کے کہنہ مشق سیاستدانوں کے سوالات کا سامنا کرنا پڑے گا۔ 12 نومبر کے بعد دیویندر فرنویس کی زیر قیادت حکومت کا یہ پہلا سب سے بڑا سیشن ہوگا۔ ایوان میں اہم ترین اعتماد کا ووٹ جیتنے کے بعد بی جے پی کو حوصلہ ملا ہے اور وہ اپنی حلیف پارٹی شیوسینا کے ساتھ مل کر اپوزیشن کا مقابلہ کرے گی، تاہم شیوسینا بھی اب حکومت کا حصہ بن گئی ہے۔ اس کے قائدین کو بھی کابینہ میں جگہ دی گئی ہے۔

شیوسینا کے 63 ارکان اسمبلی ہیں۔ دیویندر فرنویس حکومت کو اب اپوزیشن سے کسی بھی قسم کے حملہ کی پرواہ نہیں ہوگی۔ ریاست مہاراشٹرا کے علاقہ ودربھا اور مراٹھواڑہ میں کسانوں کی خودکشیاں اور خشک سالی کی صورتِ حال پر اسمبلی سیشن کے دوران گرماگرم بحث کا امکان ہے۔ این سی پی اور کانگریس نے حکومت پر الزام عائد کیا ہے کہ اس نے کسانوں کے لئے کوئی کام نہیں کیا ہے۔ ایوان میں کانگریس کے ڈپٹی لیڈر وجئے ویدیتوار نے کہا کہ بی جے پی زیر قیادت نئی حکومت ودربھا علاقہ میں زرعی مسائل حل کرنے میں ناکام ہوئی ہے۔ اس طرح یہاں کسانوں کی بڑی تعداد خودکشی کررہی ہے۔ این سی پی نے پہلے ہی فصل قرضوں کی اجرائی اور برقی بِلوں کی معافی کا مطالبہ کیا ہے۔ این سی پی نے متاثرہ کسانوں کے مسائل اور ان کی بہبودی کے مسئلہ کو اُٹھانے کا فیصلہ کیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT