Friday , November 24 2017
Home / ہندوستان / مہاراشٹرا میں اپوزیشن کے خلاف سیاسی انتقام

مہاراشٹرا میں اپوزیشن کے خلاف سیاسی انتقام

بی جے پی ۔ شیوسینا حکومت پر صدر پردیش کانگریس کا الزام
ناگپور ۔ 15 ۔ فروری : ( سیاست ڈاٹ کام ) : مہاراشٹرا میں کانگریس نے یہ الزام عائد کیا ہے کہ بی جے پی شیوسینا حکومت اپنی ناکامیوں کی پردہ پوشی کے لیے اپوزیشن کے خلاف سیاسی انتقام کی پالیسی پر گامزن ہے ۔ مہاراشٹرا پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر اشوک چوہان نے آج میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ حکومت اپوزیشن کی اختلاف رائے کو کچلنے کی کوشش کررہی ہے ۔ قبل ازیں گورنر مہاراشٹرا سی ایچ ودیا ساگر راؤ نے آدرش ہاوزنگ سوسائٹی اسکام کیس میں اشوک چوہان سے پوچھ تاچھ کے لیے سی بی آئی کو اجازت دیدی تھی ۔سابق چیف منسٹر اشوک چوہان نے کہا کہ بی جے پی کی زیر قیادت حکومت اصل اپوزیشن کانگریس کے خلاف یہ سیاسی انتقام لینے کی کوشش ہے جب کہ کانگریس نے کبھی اپوزیشن جماعتوں کے قائدین کے خلاف انتقامی رویہ اختیار نہیں کیا تھا کیونکہ انہیں ریاستی حکومت کی پالیسیوں پر تنقید کا حق ہے ۔ مہاراشٹرا میں جاریہ میک ان انڈیا ویک ، کا تذکرہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یادداشت مفاہمت ( میمورنڈم آف انڈر اسٹانگ ) کے معنی یہ نہیں ہے کہ ریاست میں سرمایہ کاری کی ضمانت مل جائے گی ۔ جب کہ حکومت کو ودربھا اور مرہٹواڑہ جیسے پسماندہ علاقوں میں سرمایہ کاری کے لیے پہل کرنی چاہئے اور ممبئی میں جاریہ میک ان انڈیا ویک کے فوائد پسماندہ علاقوں کو ہونا چاہئے ۔ کانگریس لیڈر نے کہا کہ یہ واضح نہیں ہے کہ مذکورہ یادداشت مفاہمت سے کس ضلع کو فائدہ پہنچے گا ۔۔

TOPPOPULARRECENT