Monday , June 18 2018
Home / سیاسیات / مہاراشٹرا میں حکومت تبدیل لیکن ابتر حالات برقرار

مہاراشٹرا میں حکومت تبدیل لیکن ابتر حالات برقرار

ممبئی ۔ 17 ۔ فروری : ( سیاست ڈاٹ کام ) : کمیونسٹ لیڈر گویند پنسارے پر حملہ کی مذمت کرتے ہوئے شیوسینا نے آج کہا کہ مہاراشٹرا میں بی جے پی کی زیر قیادت حکومت میں بھی امن و قانون کی صورتحال بگڑتے جارہی ہے ۔ پنسارے کو کولہاپور میں کل صبح سویرے گولی مار دی گئی تھی ۔ جس میں شدید زخمی ہوگئے ہیں ۔ شیوسینا کے ترجمان سامنا کے اداریہ میں کہا گیا ہے ک

ممبئی ۔ 17 ۔ فروری : ( سیاست ڈاٹ کام ) : کمیونسٹ لیڈر گویند پنسارے پر حملہ کی مذمت کرتے ہوئے شیوسینا نے آج کہا کہ مہاراشٹرا میں بی جے پی کی زیر قیادت حکومت میں بھی امن و قانون کی صورتحال بگڑتے جارہی ہے ۔ پنسارے کو کولہاپور میں کل صبح سویرے گولی مار دی گئی تھی ۔ جس میں شدید زخمی ہوگئے ہیں ۔ شیوسینا کے ترجمان سامنا کے اداریہ میں کہا گیا ہے کہ حکومت کی تبدیلی کے باوجود ہماری ریاست مہاراشٹرا میں اس طرح کے ناخوشگوار واقعات پیش آرہے ہیں ۔ شیوسینا نے کہا کہ توہم پرستی مخالف جہدکار نریندرا دھبولکر کو اس وقت ماردیا گیا تھا جب ریاست میں کانگریس برسراقتدار تھی ۔ لیکن اب تو ریاست میں بی جے پی کی حکومت ہے اور کمیونسٹ لیڈر پر دن کی روشنی میں حملہ کردیا گیا ۔ اس کی ذمہ داری کس پر عائد ہوگی ۔ اخبار نے بتایا کہ اب تو حکومت ہماری ہے فڈنویس حکومت میں شیوسینا بھی شامل ہے اور امن و قانون کی برقراری ہماری ذمہ داری ہے اور حملہ آوروں کو آزاد گھومنے کے لیے نہیں چھوڑ دینا چاہئے ۔ شیوسینا نے کہا کہ پنسارے مخالف ہندوتوا تھے ۔ شیواجی کے بارے میں ان کی ایک کتاب متنازعہ تھی اور کولہاپور میں ناتھورام گوڑسے کے بارے میں ان کی تقاریر کو پسند نہیں کیا جاتا تھا ۔ لیکن ان کی سماجی خدمات کو فراموش نہیں کیا جاسکتا ۔۔

TOPPOPULARRECENT