Tuesday , November 21 2017
Home / ہندوستان / مہاراشٹرا میں 29 ہزار دیہات خشک سالی سے متاثر

مہاراشٹرا میں 29 ہزار دیہات خشک سالی سے متاثر

بامبے ہائیکورٹ میں ریاستی حکومت کا باقاعدہ اعلان
ممبئی ۔ 9 ۔ مئی (سیاست ڈاٹ کام) مہاراشٹرا کے مخالف علاقوں میں پانی کی شدید قلت کے پیش نظر ریاستی حکومت نے آج بامبے ہائیکورٹ کو مطلع کیا ہیکہ ریاست بھر میں 29 ہزار دیہاتوں کو خشک سالی سے متا ثرہ ہونے کا اعلان کیا جائے گا اور قواعد کے مطابق امداد و راحت فراہم کی جائے گی۔ پانی کی قلت پر مفاد عامہ کی متفرق درخواستوں کا جواب دیتے ہوئے حکومت نے عدالت میں بتایا کہ جب بھی خشک سالی متاثرہ صورتحال کا حوالہ دیا جاتا ہے حکومت کی جانب سے اس کی وضاحت بھی کردی جاتی ہے کہ خشک سالی مراد کیا ہے ؟ اور راحت و امداد کے اقدامات کس طرح کئے جائیں۔ حکومت نے عدالت میں پیش کردہ حلفنامہ میں بتایا کہ علاقہ مراہٹواڑہ اور ودربھا میں پانی کی شدید قلت پر قابو پانے کیلئے مختلف اسکیمات کو روبعمل لایا جارہا ہے ۔ تاہم عدالت نے کارگزار ایڈوکیٹ جنرل روہت دیوت کے استدلال کا نوٹ بھی لیا کہ تمام اضلاع کیلئے روزانہ پانی کی سربراہی حکومت کیلئے ممکن نہیں ہے لیکن وقفہ وقفہ سے آبرسانی کی کوشش جاری ہے۔ قبل ازیں ایک درخواست گزار سنجے لیکھے پاٹل نے یہ الزام عائد کیا تھا کہ خشک سالی کے قواعد 2009 ء اور خشک سالی سے نمٹنے کے لئے انتظامی منصوبہ 2005 ء پر عمل آوری میں حکومت ناکام ہوگئی۔ انہوں نے یہ بھی شکایت کی تھی کہ ریاستی حکومت عمداً مہاراشٹرا میں خشک سالی کی صورتحال کا اعلان نہیں کر رہی ہے ، حتیٰ کہ متاثرہ علاقوں کو بھی راز میں رکھا گیا ہے ۔ بصورت دیگر حکومت کو متاثرہ دیہاتوں میں امداد و راحت فراہم لازمی ہوجاتا ہے ۔ ہائیکورٹ نے سرکاری حلفنامہ کا جائزہ لینے کے بعد حکومت کے اقدامات پر طمانیت کا اظہار کیا ہے اور 24 مئی تک سماعت کو ملتوی کردیا گیا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT