Tuesday , December 11 2018

مہا کوٹمی سے ٹی آر ایس کو کوئی نقصان نہیں : ہریش راؤ

ٹی آر ایس کارکنوں کے حوصلے بلند، وزیر آبپاشی کی میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت
حیدرآباد۔/24 نومبر، ( سیاست نیوز) وزیرآبپاشی ہریش راؤ نے دعویٰ کیا کہ تلنگانہ میں بھلے کتنے ہی پارٹیاں اتحاد کرلیں لیکن ٹی آر ایس کو کوئی نقصان نہیں ہوگا۔ چاہے کتنی پارٹیاں مل کر میدان میں آئیں ہم میں اُن سے مقابلہ کی طاقت موجود ہے۔ سونیا گاندھی نے تلنگانہ میں جلسہ منعقد کیا لیکن آندھرا پردیش کے حق میں تقریر کی۔ انہوں نے سونیا گاندھی سے سوال کیا کہ تلنگانہ کے جلسہ میں آندھرا پردیش کیلئے کس طرح خصوصی موقف کا وعدہ کیا گیا۔ ہریش راؤ نے کہا کہ آندھرا پردیش کو خصوصی موقف کا مطلب تلنگانہ سے ناانصافی ہے اور سونیا گاندھی نے اپنے مخالف تلنگانہ موقف کا اظہارکردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سونیا گاندھی نے تلنگانہ کیلئے صنعتی شعبہ میں رعایتوں سے متعلق بھی کچھ نہیں کہا۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ سونیا گاندھی نے میڑچل کے جلسہ عام میں چندرا بابونائیڈو کی جانب سے لکھے گئے اسکرپٹ کو پڑھ دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ چندرا بابو نائیڈو نے نشستیں تقسیم کی اور انہوں نے ہی اسکرپٹ لکھ کر دیا ہے۔ ہریش راؤ نے کہا کہ کانگریس کے جلسہ عام سے عوام کا اعتماد مہا کوٹمی پر سے اُٹھ چکا ہے اور عوام اس نتیجہ پر پہنچے ہیں کہ صرف کے سی آر تلنگانہ کو بچا سکتے ہیں اور وہی ترقی دے سکتے ہیں۔ محبوب نگر ضلع میں میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے ہریش راؤ نے کہا کہ چندرا بابو نائیڈو نے محبوب نگر کے آبپاشی پراجکٹس کی تعمیر میں رکاوٹ پیدا کی۔ انہوں نے کہا کہ ایک ہزار چندرا بابو کیوں نہ آجائیں محبوب نگر ضلع میں پراجکٹس کی تعمیر ہوکر رہے گی۔ آئندہ 5 برسوں میں متحدہ محبوب نگر ضلع کے ہر اسمبلی حلقہ میں آبپاشی کیلئے پانی سیراب کیا جائے گا۔ متحدہ آندھرا پردیش میں تلنگانہ کے پراجکٹس کو نظرانداز کیا گیا تھا لیکن ٹی آر ایس نے نہ صرف پراجکٹس کا آغاز کیا بلکہ مقررہ وقت پر تکمیل کی مساعی کی۔ عدالتوں میں مقدمات کے ذریعہ رکاوٹ پیدا کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ انہو ں نے کہا کہ کانگریس کے جلسہ عام میں راہول گاندھی اور اتم کمار ریڈی نے کہا کہ مہا کوٹمی میں شامل جماعتوں میں عدم تعاون کا اعتراف کرلیا اور کارکنوں کو ایک دوسرے کی مدد کرنے کی تلقین کی۔ انہوں نے کہا کہ تلگودیشم کے تلنگانہ صدر ایل رمنا کی موجودگی میں تلگودیشم کے قائد نروتم نے کانگریس میں شمولیت اختیار کرلی۔ انہوں نے کہا کہ مہا کوٹمی میں ہر قدم پر مسائل ہیں اور پارٹیوں نے ایک دوسرے کے حلقوں میں اپنے امیدواروں کو بی فارم جاری کردیئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کے جلسہ عام کے بعد ٹی آر ایس کارکنوں کے حوصلے مزید بلند ہوچکے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT