Saturday , December 16 2017
Home / دنیا / میانمار حکومت کی کارروائی کو چین کی حمایت

میانمار حکومت کی کارروائی کو چین کی حمایت

بیجنگ، 19ستمبر،(سیاست ڈاٹ کام) چین نے ملک کی سلامتی کے اپنے مفادات کے تحفظ اور حالیہ تشدد کے واقعات کے خلاف میانمار کے اقدامات کی حمایت کی ہے ۔چین کی وزارت خارجہ نے آج یہاں جاری ایک بیان میں بتایا کہ وزیر خارجہ وانگ یی نے اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انتونیو گوٹیرس سے اقوام متحدہ میں منعقد ایک اجلاس کے دوران کہا کہ میانمار نے اپنے ملک کی حفاظت کے لئے جو بھی قدم اٹھایا ہے ، چین اس کی حمایت کرتا ہے ۔ غور طلب ہے کہ مغربی میانمار کے راکھین صوبے میں گذشتہ 25 اگست کو روہنگیا باغیوں کا پولیس چوکیوں اور فوج کے کیمپوں پر حملے کے بعد سے ان کے خلاف شروع ہوئی پر تشدد کارروائی اب بھی جاری ہے ۔ ان حملوں میں تقریبا 12 افراد ہلاک ہوگئے تھے ۔فوج کی پرتشدد کاروائی کی وجہ سے میانمار سے اب تک چار لاکھ سے زیادہ روہنگیابنگلہ دیش میں پناہ لے چکے ۔

 

پناہ گزینوں کیلئے ٹرمپ سے مدد کی توقع نہیں:شیخ حسینہ
نیویارک، 19 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) بنگلہ دیش کی وزیر اعظم شیخ حسینہ نے کہا کہ انہوں نے پیر کے روز امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ سے روہنگیا پناہ گزینوں کے معاملے پر بات کی، لیکن انہیں پناہ گزینوں کی مدد کے لئے ان سے کوئی توقع نہیں ہے ، کیونکہ انہوں نے پناہ گزینوں پر اپنی رائے واضح کردی ہے ۔ شیخ حسینہ نے کہا کہ امریکی صدر کی طرف سے اقوام متحدہ کی اصلاحات کے لئے منعقدہ پروگرام کے بعد جب وہ رخصت ہونے لگے تو انہوں نے مسٹر ٹرمپ کو چند منٹ کے لئے روکا ، تو انہوں نے صرف یہ پوچھا کہ بنگلہ دیش کیسا ہے ؟ میں نے کہا کہ بہت اچھا ہے ، ہمیں میانمار سے آنے والے پناہ گزینوں کی وجہ سے پریشانی کا سامنا ہے۔ شیخ حسینہ نے نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ مسٹر ٹرمپ نے پناہ گزینوں کے سلسلے میں کوئی تبصرہ نہیں کیا۔ بنگلہ دیش کی وزیر اعظم اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس میں شرکت کے لئے نیو یارک میں ہیں، جہاں وہ جنرل اسمبلی کے سالانہ اجلاس سے جمعرات کو خطاب کرنے والی ہیں۔
انہوں نے کہا کہ پناہ گزینوں پر مسٹر ٹرمپ کا موقف واضح ہے ، اس لئے روہنگیا پناہ گزینوں کے لئے ان سے مدد مانگنا مناسب نہیں ہے ۔ دریں اثناء، وہائٹ ہاؤس کے ایک سینئر افسر نے محترمہ شیخ حسینہ اور مسٹر ٹرمپ کے درمیان ہونے والے گفتگو سے لاعلمی ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ امریکی صدر روہنگیا پناہ گزینوں کے مسئلے میں انتہائی دلچسپی رکھتے ہیں ۔ اگر یہ مسئلہ ان کے سامنے اٹھایا جاتا ہے ، تو یقینا وہ اس میں شامل ہوں گے ۔

TOPPOPULARRECENT