Thursday , December 13 2018

میانمار میں روہنگیا مسلمان ووٹنگ کے حق سے محروم

ینگون۔ 12 فبروری۔(سیاست ڈاٹ کام) میانمار میں وزیر اعظم کی جانب سے ووٹنگ کا عارضی حق واپس لئے جانے کے بعد روہنگیا مسلمان ملک میں منعقد شدنی ریفرینڈم میں ووٹ نہیں دے سکیں گے۔وزیر اعظم تھین سین کی جانب سے یہ فیصلہ ملک میں سینکڑوں بودھوں کے مظاہروں کے بعد سامنے آیا ہے۔ میانمار میں دس لاکھ سے زیادہ روہنگیا مسلمان آباد ہیں لیکن حکومت ان

ینگون۔ 12 فبروری۔(سیاست ڈاٹ کام) میانمار میں وزیر اعظم کی جانب سے ووٹنگ کا عارضی حق واپس لئے جانے کے بعد روہنگیا مسلمان ملک میں منعقد شدنی ریفرینڈم میں ووٹ نہیں دے سکیں گے۔وزیر اعظم تھین سین کی جانب سے یہ فیصلہ ملک میں سینکڑوں بودھوں کے مظاہروں کے بعد سامنے آیا ہے۔ میانمار میں دس لاکھ سے زیادہ روہنگیا مسلمان آباد ہیں لیکن حکومت انھیں میانمار کا شہری تسلیم نہیں کرتی۔ان مسلمانوں کو پرتشدد کارروائیوں کا سامنا بھی رہا ہے اور ریاست رخائن میں 2012 ء میں بودھ ۔مسلم فسادات میں زائد از 200 افراد مارے گئے تھے۔ 2010ء میں ملک کی حکمران فوجی جنتا نے ’وائٹ کارڈز‘ متعارف کروائے تھے جن کی وجہ سے روہنگیا اور دیگر اقلیتوں کو عام انتخابات میں ووٹ دینے کا حق مل گیا تھا۔ وزیراعظم نے ابتدا میں تو پارلیمان سے ان دستاویزات کی اجازت دینے کو کہا تھا۔ تاہم اب داخلی دباؤ کی وجہ سے وہ اپنا فیصلہ تبدیل کرنے پر مجبور ہوگئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT