Tuesday , November 21 2017
Home / دنیا / میانمار میں مزید 250 قیدیوں کی سزائیں معاف

میانمار میں مزید 250 قیدیوں کی سزائیں معاف

منڈالے۔ 24 مئی (سیاست ڈاٹ کام) میانمار نے نسلی باغی گروپس کے ساتھ امن مذاکرات کے انعقاد سے قبل زائد از 250 قیدیوں کی سزائیں معاف کردیں۔ ان قیدیوں میں وہ دو قیدی بھی شامل ہیں جنہوں نے بین مذاہب قیام امن کے لئے کافی جدوجہد کی تھی اور جنہیں سزائے بامشقت دی گئی تھی۔ صدر کے دفتر سے جاری کئے گئے اعلان کے مطابق معاف کئے جانے والے میانمار کے قیدیوں کی تعداد 186 اور بیرون ملک کے قیدیوں کی تعداد 73 بتائی گئی ہے۔ انہیں جذبہ خیرسگالی کے تحت رہا کردیا جائے گا۔ ان رہا ہونے والے قیدیوں میں زازا لاٹ اور ونٹ پھہولاٹ بھی شامل ہیں جنہیں 2015ء میں کچن کی انڈپنڈنس آرمی کے ہیڈکوارٹرس کا دورہ کرنے اور عیسائی صلیب اور گوتم بدھ کے مجسمہ کو امن کی علامت کے طور پر وہاں پہنچانے کی پاداش میں گرفتار کیا گیا تھا۔ گزشتہ سال انہیں دو سال کی قید بامشقت کی سزا دی گئی تھی جس پر انسانی حقوق کے علمبرداروں نے کافی واویلا مچایاتھا اور سیاسی محرکات کا حامل معاملہ قرار دیتے ہوئے بدھسٹ شہریوں کے خلاف نفرت انگیز جرم سے بھی تعبیر کیا تھا۔ عام معافی کی اس خبر کے عام ہوتے ہی ’’دی سی گل‘‘ نامی ایک انسانی حقوق تنظیم کے ڈائریکٹر ہیری میولین نے اظہار مسرت کیا اور فوری ان سے (قیدیوں) ملاقات کے لئے پہنچے۔ یاد رہے کہ میانمار میں جنٹا حکومت کے خاتمہ کے بعد اب تک زائد از 1000 قیدیوں کو جذبہ خیرسگالی کے تحت رہا کیا جاچکا ہے۔

TOPPOPULARRECENT