Thursday , December 13 2018

میاپن اور راج کنڈرا ملوث ‘ سرینواسن کو کلین چٹ

نئی دہلی 17 نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) آئی پی ایل سٹہ بازی اور اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل میں جسٹس مڈگل کمیٹی نے اپنی تحقیقات میں گروناتھ میاپن اور راج کنڈرا کو ماخوذ کیا ہے اور بیٹنگ میں ان کے رول کی توثیق کی ہے جس کے نتیجہ میں چینائی سوپر کنگس اور راجستھان رائلس ٹیموں پر اثر ہوسکتا ہے ۔ تاہم اس کمیٹی نے این سرینواسن پر میچ فکسنگ اور تحقیقات میں رکاوٹ بننے کے الزامات خارج کردئے ہیں۔ سہ رکنی کمیٹی نے سپریم کورٹ کو پیش کردہ اپنی رپورٹ میں تاہم بی سی سی آئی کے صدر سرینواسن کو اس لئے ماخوذ کیا ہے کیونکہ وہ ایک کرکٹر کے خلاب کھلاڑیوں کے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر کارروائی میں ناکام رہے ۔ کمیٹی نے اس کرکٹر کا نام نہیں بتایا اور کہا کہ سرینواسن اس کی خلاف ورزیوں سے واقف تھے ۔ کمیٹی نے کہا کہ گروناتھ میاپن اور راج کنڈرا نے بی سی سی آئی / آئی پی ایل انسداد کرپشن ضابطوں کی خلاف ورزی کی ہے ۔ آئی پی ایل کے ضابطہ اخلاق میں یہ دفعہ ہے جس میں کہا گیا ہے کہ اگر کوئی ٹیم عہدیدار بیٹنگ یا میچ فکسنگ کے ذریعہ کھیل کو رسوا کرنے میں ملوث رہا تو ان کی ٹیم کو ٹورنمنٹ سے روکا جاسکتا ہے ۔ کمیٹی نے کہا کہ گروناتھ میاپن بیٹنگ میں ملوث تھے میچ فکسنگ میں نہیں ۔

TOPPOPULARRECENT