Saturday , October 20 2018
Home / شہر کی خبریں / میاں پور تا اسمبلی 12 لائنس سڑک کی تعمیر

میاں پور تا اسمبلی 12 لائنس سڑک کی تعمیر

۔1950 کروڑ روپئے کا تخمینہ ، فائل چیف منسٹر کے دفتر روانہ
حیدرآباد ۔ /19 نومبر (سیاست نیوز) میاں پور تا اسمبلی (12) بارہ لائن کی سڑکوں کی تعمیر کیلئے محکمہ فینانس کی جانب سے ہری جھنڈی دکھادی گئی ہے ۔ اور اس فائل پر وزیر شہری ترقیات کے ٹی آر نے دستخط بھی کردیئے ہیں اور یہ فائل منظوری کیلئے وزیر اعلیٰ کے سی آر کے دفتر روانہ کردی گئی ہے اور ان بارہ لائن والی سڑکوں کی تعمیر کیلئے تقریباً 1950 ء کروڑ کا تخمینہ لگایا گیا ہے ۔ عظیم تر بلدیہ کی حدود میں 100 کلو میٹر کو دو حصوں میں تقسیم کرکے وائڈ ٹیاپنگ روڈس تعمیر کئے جانے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ ہر سال بارش کے موسم میں بلدیہ کی سڑکیں خراب ہوتی جارہی ہیں ۔ اس لئے مستقل طور پر سمنٹ روڈس (وائڈ ٹیاپنگ) تیار کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ مختلف محکمہ جات کے درمیان آپسی تال میل نہ ہونے کی وجہ سے سڑکیں بار بار کھودنے کی وجہ سے بھی خراب ہورہی تھیں ۔ اس بات کو بھی مدنظر رکھتے ہوئے سڑک کی دونوں جانب ڈرینیج اور پانی کی پائپ لائنس بھی بچھائی جائیں گی ۔ علاوہ ازیں برقی اور کیبل لائنس کی تنصیب کیلئے بھی سڑک کی دونوں جانب مستقل انتظامات کئے جارہے ہیں ۔ بعد ازاں مستقل طور پر وائڈ ٹیاپنگ کے ذریعہ 12 لائن پر مشتمل سڑکیں بچھائی جائے گی ۔ 1950 ء کروڑ کی لاگت سے تعمیر کی جانے والی ان سڑکوںکیلئے محکمہ مالیہ نے منظوری دیدی ہے ۔ قدیم رنگ روڈ ایل بی نگر تا آرام گھر اور وہاں سے ریتی باؤلی ہوتے ہوئے مہدی پٹنم ، پنجہ گٹہ ، بیگم پیٹ ، ریل بھون ، مٹو گوڑہ ، اوپل ، ناگول اور ایل بی نگر تک ایک حصہ کی تکمیل کریں گے ۔ دوسرے حصہ میں میاں پور تا اسمبلی ہوتے ہوتے ایل بی نگر تک سڑک بچھائی جائے گی اور ٹنڈرس حاصل کرنے والے پر لازم ہوگا کہ ایک برس کے عرصہ میں کاموں کی تکمیل کریں ۔ وائڈ ٹیاپنگ سڑک کی تنصیب سے سڑکیں بار بار خراب ہونے کا اندیشہ نہیں رہتا ۔

TOPPOPULARRECENT