Saturday , November 18 2017
Home / ہندوستان / میجر گوگوئی کی جانب سے اپنا دفاع ، پھولوں کے ہار اور خشت باری

میجر گوگوئی کی جانب سے اپنا دفاع ، پھولوں کے ہار اور خشت باری

کشمیر میں جیپ سے سنگباری کرنے والے کو گھسیٹنے پر ایوارڈ یافتہ پر سیاسی پارٹیوں کی تنقیدیں
سرینگر ؍ نئی دہلی ؍ جئے پور۔ 23 مئی (سیاست ڈاٹ کام) میجر ایل گوگوئی جس کی ستائش اور تنقیدیں مساوی طور پر کی جارہی ہیں، کیونکہ اسے انسانی ڈھال کی کارروائی کو ختم کروانے کیلئے ایوارڈ دیا گیا ہے، جبکہ اس کی جانب سے سنگباری کرنے والے ایک کشمیری شخص کو اپنی جیپ سے باندھ کر گھسیٹنے کی ویڈیو فلم سماجی ذرائع ابلاغ پر برسرعام پیش کردی گئی تھی۔ قومی ٹی وی پر پیش ہوتے ہوئے میجر گوگوئی نے جنہیں فوج کے سربراہ بپن راوت نے حال ہی میں ایک سپاس نامہ پیش کیا تھا، اپنی کارروائی کا دفاع کیا۔ حکومت کے تائید یافتہ عہدیدار جنہیں مرکزی وزیر وینکیا نائیڈو نے غیرمعمولی حالات میں زندگیاں بچانے والا قرار دیا تھا، اس کی ویڈیو فلم جس میں فاروق احمد ڈار کو گاڑی کے بانیٹ سے باندھ کر گھسیٹا گیا تھا، ان کے لئے تنقید کی وجہ بن گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ 9 اپریل کو سرینگر لوک سبھا انتخابی حلقہ میں ضمنی انتخابات کے دوران یہ شخص دیگر افراد کو اشتعال انگیزی کرتے ہوئے دیکھا گیا تھا۔ جموں و کشمیر پولیس کے بموجب اس واقعہ کی تحقیقات ہنوز جاری ہے، کیونکہ ایف آئی آر ہنوز برقرار ہے۔ فاروق احمد ڈار نے ضلع بڈگام کے دیہات چل میں اخباری نمائندہ سے کہا کہ انہیں حیرت ہے کہ فوجی عہدیدار کی اس کارروائی کو قابل ستائش قرار دیا جارہا ہے۔ دریں اثناء ایمنسٹی انٹرنیشنل نے گوگوئی کو اعزاز عطا کرنے کے فوج کے فیصلے کی مذمت کی ہے۔

ایمنسٹی انڈیا کے ایگزیکٹیو ڈائریکٹر آکار پٹیل نے کہا کہ انسانی حقوق کی خلاف ورزی کے سلسلے میں جس عہدیدار کے خلاف تحقیقات جاری ہوں، اس کو اعزاز عطا کرنا ظالمانہ، غیرانسانی اور اذیت رسانی کی ستائش کے مترادف ہے۔ نئی دہلی سے موصولہ اطلاع کے بموجب سی پی آئی اور جے ڈی یو نے فوج کے میجر گوگوئی کو اعزاز عطا کرنے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اس سے شورش زدہ ریاست کی حالت مزید پیچیدہ ہوجائے گی، تاہم کانگریس کے امریندر سنگھ نے جو 1960ء کی دہائی میں فوج میں تھے اور فی الحال پنجاب کے چیف منسٹر ہیں، کہا کہ اگر وہ گوگوئی کی جگہ ہوتے تو وہ بھی وہی کرتے جو گوگوئی نے کیا ہے۔ کانگریس کے ترجمان اعلیٰ رندیپ سرجے والا نے کہا کہ اپنے عہدیداروں کو اعزاز عطا کرنا سربراہ فوج کا اختیار تمیزی ہے اور اس پر اعتراض مناسب نہیں ہے۔ دریں اثناء جموں و کشمیر میں برسراقتدار پی ڈی پی نے میجر گوگوئی کو اعزاز عطا کرنے پر برہمی ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ یہ اسے ناقابل قبول ہے۔

TOPPOPULARRECENT