Wednesday , September 19 2018
Home / شہر کی خبریں / میدک سے ٹی آر ایس کی شاندار کامیابی عوامی تائید کا اظہار

میدک سے ٹی آر ایس کی شاندار کامیابی عوامی تائید کا اظہار

عوام نے تلگودیشم ۔ بی جے پی کو مسترد کردیا، چیف منسٹر کے سی آر کا دعویٰ

عوام نے تلگودیشم ۔ بی جے پی کو مسترد کردیا، چیف منسٹر کے سی آر کا دعویٰ
حیدرآباد۔/16ستمبر ( سیاست نیوز) چیف منسٹر و صدر ٹی آر ایس کے چندر شیکھر راؤ نے میدک لوک سبھا کے ضمنی چناؤ میں ٹی آر ایس امیدوار کی شاندار کامیابی کو تلنگانہ حکومت کی 100دن کی کارکردگی پر عوامی اعتماد سے تعبیر کیا اور کہا کہ اپوزیشن کی جانب سے حکومت کے خلاف زبردست پروپگنڈہ کے باوجود تلنگانہ عوام نے ٹی آر ایس پر اپنے مکمل بھروسہ کا اظہار کیا ہے۔ تلنگانہ بھون میں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے چندر شیکھر راؤ نے ٹی آر ایس امیدوار پربھاکر ریڈی کی کامیابی کیلئے حلقہ کے تمام رائے دہندوں سے اظہار تشکر کیا۔ انہوں نے ٹی آر ایس کی تائید کرنے پر سی پی آئی اور سی پی ایم سے بھی تشکر کا اظہار کرتے ہوئے انتخابی مہم میں اہم رول ادا کرنے والے وزراء، ارکان اسمبلی کی محنت اور کاوشوں کو سراہا۔ چیف منسٹر نے کہا کہ بی جے پی، کانگریس اور تلگودیشم کے قائدین نے حکومت کے خلاف گوبلس کی طرح جھوٹا پروپگنڈہ کیا اور ہر ایک مسئلہ پر عوام کو گمراہ کرنے کی کوشش کی۔ اپوزیشن نے انتخابی مہم کے دوران حکومت کی جانب سے کئے گئے وعدوں کی عدم تکمیل کو انتخابی موضوع بنایا اور یہ ظاہر کرنے کی کوشش کی کہ حکومت وعدوں کی تکمیل میں سنجیدہ نہیں ہے اس کے باوجود عوام نے ٹی آر ایس پر مکمل اعتماد کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے اپوزیشن جماعتوں کو مشورہ دیا کہ وہ کم از کم اب تعمیری اپوزیشن کا رول ادا کرنے کیلئے تیار ہوجائیں اور ہر مسئلہ پر تنقید کے بجائے حکومت کو اسکیمات پر عمل آوری کے سلسلہ میں تعمیری تجاویز پیش کریں جسے قبول کرنے کیلئے حکومت تیار ہے۔ چندر شیکھر راؤ نے کہا کہ تلگودیشم اور بی جے پی کی جانب سے متحدہ امیدوار کھڑا کئے جانے کے باوجود عوام نے ان جماعتوں کو بری طرح مسترد کردیا ہے۔ انتخابی نتائج سے یہ ثابت ہوچکا ہے کہ تلنگانہ میں اب تلگودیشم پارٹی کیلئے کوئی جگہ نہیں۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ صدر تلگودیشم چندرا بابو نائیڈو نے ٹی آر ایس کو شکست سے دوچار کرنے کیلئے میدک میں بھاری رقومات روانہ کی۔ تلگودیشم کے قائدین کو بھاری رقم کے ساتھ گرفتار بھی کیا گیا اس کے باوجود چندرا بابو نائیڈو نے مزید رقم روانہ کی جس کا ثبوت حکومت کے پاس موجود ہے۔ چیف منسٹر نے کہا کہ میدک ضمنی انتخابات میں کامیابی سے حکومت اور پارٹی کی ذمہ داریوں میں مزید اضافہ ہوچکا ہے۔ انہوں نے میدک سے ٹی آر ایس کی کامیابی کو عوامی کامیابی سے تعبیر کیا اور کہا کہ حکومت کے انداز کارکردگی پر عوام کو مکمل بھروسہ ہے۔ انہوں نے افسوس کا اظہار کیا کہ انتخابی مہم کے دوران تلگودیشم سے تعلق رکھنے والے بعض قائدین نے الزامات عائد کرنے میں اخلاقی حدود کو بھی پار کردیا تھا۔ میڈیا کے بعض مخالف گوشوں نے بھی ٹی آر ایس کے خلاف مہم چلائی لیکن اس کا عوام پر کوئی اثر نہیں ہوا۔ ایک سوال کے جواب میں چندر شیکھر راؤ نے کہا کہ ملک کے مختلف حصوں میں ہوئے ضمنی انتخابات میں کسی بھی پارٹی کو اس قدر عوامی تائید حاصل نہیں ہوئی جس طرح ٹی آر ایس کو میدک میں حاصل ہوئی ہے۔ لوک سبھا حلقہ کے تحت تمام 7اسمبلی حلقوں میں ٹی آر یس نے بھاری اکثریت حاصل کی۔انہوں نے میدک انتخابی مہم کے انچارج ریاستی وزیر ہریش راؤ ، ڈپٹی اسپیکر پدما دیویندر ریڈی اور دیگر وزراء اور ارکان اسمبلی کی کارکردگی کی بھی ستائش کی۔

TOPPOPULARRECENT