Thursday , December 14 2017
Home / شہر کی خبریں / میدک میں برڈفلو کا خوف ، پولٹری دوکانات کی چیکنگ

میدک میں برڈفلو کا خوف ، پولٹری دوکانات کی چیکنگ

بیدر سے آنے والی پولٹری گاڑیوں پر پابندی ، تلنگانہ غیر متاثر
حیدرآباد ۔ 13 ۔ مئی : ( ایجنسیز ) : بیدر میں برڈفلو کی وبا پھیلنے کے بعد اب اس کا رخ تلنگانہ کی جانب تو نہیں ہے ؟ ایسے امکانات پائے جاتے ہیں ۔ اس سلسلہ میں انیمل ہسبنڈری ڈپارٹمنٹ کے عہدیدار ضلع میدک میں فوری طور پر اقدامات کرتے ہوئے اس بات کا پتہ لگانے کی کوشش کررہے ہیں کہ پچھلے چند روز میں یہاں ریٹل پولٹری کی دوکانوں میں آیا مرغیوں کی موت تو نہیں ہوئی ہے ؟ حالیہ طور پر ضلع بیدر کے ملکیرہ ، ہمناآباد علاقے میں پولٹری فارم میں برڈ فلو کے اثرات پائے گئے تھے ۔ عہدیدار اس بات کا خدشہ ظاہر کئے ہیں کہ پولٹری اور انڈوں سے بھرے ٹریکس 9 مئی سے قبل تلنگانہ میں داخل ہوئے ہوں تاہم یقینی طور پر یہ بات نہیں کہی جاسکتی ۔ محکمہ انیمل ہسبینڈری کے عہدیداروں نے بتایا کہ 9 مئی کے بعد سے پولٹری اشیاء اور مرغیوں سے بھرے ٹرکس کو روک دیا گیا ہے ۔ ایک دیگر عہدیدار نے بتایا کہ اگر بیدر سے آنے والے پولٹری ٹرکس کے ذریعہ ریاست میں برڈ فلو کی وبا پھیلتی تب برڈفلو کے کیس سامنے آتے جب کہ ضلع میدک میں کوئی ایسا کیس سامنے نہیں آیا اور نہ ہی کوئی افواہ پھیلنے کی اطلاع ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ پولٹری کے نمونوں کو تلنگانہ کے ریسرچ انسٹی ٹیوٹ ( وی بی آر آئی ) کو جانچ کے لیے روانہ کیا گیا ہے اور ابتدائی جانچ میں برڈفلو کے کوئی آثار سامنے نہیں آئے ۔ 9 مئی سے قبل ریاست تلنگانہ میں پولٹری گاڑیوں کے داخلہ کے سوال پر انہوں نے بتایا کہ تلنگانہ میں تاحال برڈفلو کے کوئی آثار نہیں پائے جاتے ۔ انہوں نے بتایا کہ کرناٹک اور مہاراشٹرا سے ریاست تلنگانہ کو مرغیوں اور انڈوں کی بڑی مقدار کو استعمال کے لیے منتقلی عمل میں آئی ہے اور کرناٹک کے علاقے ہمناآباد سے تلنگانہ پہنچنے میں کوئی زیادہ وقت نہیں لگتا ۔ ذرائع نے بتایا کہ ٹرانسپورٹ ، ریونیو ، انیمل ہسبنڈری اور محکمہ پولیس کی جانب سے پولٹری گاڑیوں کو تلنگانہ کی سرحد پر روکے جانے پر مرکزی حکومت کی جانب الرٹ کردیا گیا ہے ۔ بتایا گیا ہے کہ کرناٹک میں برڈفلو کی وبا پھیلنے کے بعد بیدر کرناٹک میں 1 لاکھ سے زائد مرغیوں کو اب تک تلف کردیا گیا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT