Monday , November 20 2017
Home / اضلاع کی خبریں / میدک میں خاتون ٹیچرس کا احتجاج

میدک میں خاتون ٹیچرس کا احتجاج

ڈپٹی چیف منسٹر کڈیم سری ہری کے ریمارک پر سخت برہمی
میدک ۔ 9 اگست (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) میدک اسٹیٹ ٹیچرس اسوسی ایشن ویمن ونگ STU(W) کی جانب سے دفتر آر ڈی او پر STU ریاستی قائدین کی زیرقیادت ریاستی وزیر تعلیم (ڈپٹی چیف منسٹر) مسٹر کڈیم سری ہری کے خلاف دھرنا منظم کرتے ہوئے آر ڈی او میدک مسٹر ایم ناگیش کو ایک تفصیلی یادداشت بھی پیش کیا گیا، جس میں کڈیم سری ہری کے خاتون ٹیچرس کی شان میں کئے گئے ریمارکس کو واپس لینے اور غیرمشروط معافی مانگنے کا مطالبہ کیا گیا۔ واضح رہیکہ ڈپٹی سی ایم وزیراعلیٰ تعلیم نے 8 اگست کو ایک پروگرام میں کہا تھا کہ خاتون ٹیچرس محض اپنے بناؤسنگھار ہی میں مصروف رہتے ہیں۔ اپنی درس و تدریس خدمات کی انجام دہی میں کوتاہی کرتے ہیں۔ وزیراعلیٰ تعلیم جن کا خود پیشہ درس و تدریس سے تھا اس طرح کا غیرذمہ دارانہ بیان دیتے ہوئے خاتون اساتذہ کے جذبات کو ٹھیس پہنچائے ہیں۔ خاتون اساتذہ نے کہا کہ گھریلو کام کاج سے نمٹنے کے بعد بھی خواتین ٹیچرس اپنی ملازمتوں سے انصاف کرتی آرہی ہیں۔ وزیراعلیٰ تعلیم کا بیان بدبختانہ ہے۔ ٹیچرس تنظیم کے ریاستی قائدین نے وزیراعلیٰ تعلیم سے کہا کہ فی الفور وہ اپنا بیان واپس لیں اور معلمات سے غیرمشروط معافی مانگیں ورنہ بصورت دیگر اس مسئلہ کو ریاستی سطح پر اٹھا کر احتجاج میں شدت پیدا کردی جائے گی۔ اس موقع پر مقامی خاتون ٹیچرس ریکھا، سلوچنا ، انجلی، اندرا، لکشمی برنیا، وجئے نرملا، ثمرین فاطمہ، پرشانتی گائتری، عرشیہ، عطیہ خانم، سدھا، کویتا، بی رمنا کے علاوہ ایس ٹی یو قائدین ایس پربھاکر، بال کرشنا، ارون کمار، نرسنگ راؤ، دلیپ کمار کے علاوہ دیگر اساتذہ کی بڑی تعداد شریک تھی۔

TOPPOPULARRECENT