Wednesday , January 17 2018
Home / شہر کی خبریں / میدک نتائج تلنگانہ عوام کی فتح : محمد محمود علی

میدک نتائج تلنگانہ عوام کی فتح : محمد محمود علی

ٹی آر ایس حکومت سنہرے تلنگانہ کی تکمیل کا خواب پورا کرے گی ، عوام نے کانگریس اور بی جے پی کو سبق سکھایا

ٹی آر ایس حکومت سنہرے تلنگانہ کی تکمیل کا خواب پورا کرے گی ، عوام نے کانگریس اور بی جے پی کو سبق سکھایا
حیدرآباد۔/16ستمبر، ( سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر تلنگانہ محمد محمود علی نے میدک لوک سبھا حلقہ سے ٹی آر ایس امیدوار کی بھاری اکثریت سے کامیابی کو تلنگانہ عوام کی فتح سے تعبیر کیا۔ انہوں نے کہا کہ تمام 7 اسمبلی حلقوں میں ٹی آر ایس کو اکثریت کے ذریعہ عوام نے یہ ثابت کردیا ہے کہ وہ کسی بھی جماعت کے بہکاوے میں آنے والے نہیں اور انہیں کے سی آر کی زیر قیادت ٹی آر ایس حکومت پر مکمل ایقان ہے کہ وہ سنہرے تلنگانہ کی تکمیل کا خواب پورا کرے گی۔ محمود علی نے کہا کہ اپوزیشن جماعتوں نے ٹی آر ایس کو نقصان پہنچانے کیلئے ہر طرح کے حربے استعمال کئے لیکن عوام نے یہ ثابت کردیا کہ تلنگانہ کے حصول کی کامیاب جدوجہد کرنے والی ٹی آر ایس ہی ان کے مسائل کو حل کرسکتی ہے۔ انتخابی نتیجہ سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ آنے والے دنوں میں مخالف تلنگانہ جماعتوں کیلئے علاقہ میں کوئی جگہ نہیں۔ محمود علی نے کہا کہ کانگریس اور بی جے پی کے امیدواروں کو عوام نے مناسب سبق سکھایا ہے۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے تمام سات اسمبلی حلقوں کے رائے دہندوں سے اظہار تشکر کرتے ہوئے کہا کہ سماج کے تمام طبقات نے ٹی آر ایس کی مکمل تائید کی ہے۔ چیف منسٹر نے ریاست کی ترقی اور عوامی بھلائی کے سلسلہ میں جو وعدے کئے تھے ان پر عمل آوری کا عنقریب آغاز ہوگا۔ حکومت تمام اسکیمات پر موثر انداز میں شفافیت کے ساتھ عمل آوری کی خواہاں ہے تاکہ اسکیمات کے فوائد حقیقی مستحقین تک پہنچیں۔ انہوں نے کہا کہ بہت جلد حکومت کی اسکیمات پر عمل آوری کیلئے پالیسی کا اعلان کیا جائے گا۔ محمود علی نے اقلیتی رائے دہندوں سے بھی بطور خاص اظہار تشکر کیا جنہوں نے اپوزیشن کے پروپگنڈہ کے باوجود ٹی آر ایس اور اس کی قیادت پر مکمل اعتماد کا اظہار کیا ہے۔ واضح رہے کہ ڈپٹی چیف منسٹر نے میدک لوک سبھا ضمنی چناؤ کی انتخابی مہم میں اقلیتی رائے دہندوں کی تائید کے حصول میں اہم رول ادا کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ 60برسوں میں کانگریس اور تلگودیشم نے جس طرح اقلیتوں کو ہر شعبہ میں نظر انداز کیا ہے اس کا کے سی آر کو شدت سے احساس ہے اور وہ چاہتے ہیں کہ دیگر طبقات کی طرح اقلیتیں بھی ہر شعبہ میں یکساں طور پر ترقی کریں۔ حکومت نے بجٹ میں اقلیتی بہبود کیلئے 1000کروڑ روپئے مختص کرتے ہوئے اپنی سنجیدگی کا مظاہرہ کیا ہے اور تعلیمی و معاشی ترقی کے سلسلہ میں کئی منفرد اسکیمات حکومت کے زیر غور ہیں۔ انہوں نے اقلیتوں کو یقین دلایا کہ تلنگانہ میں ان کے سنہرے دنوں کا جلد ہی آغاز ہوگا۔

TOPPOPULARRECENT