Saturday , December 16 2017
Home / اضلاع کی خبریں / میدک کیلئے 100 کروڑ روپئے خصوصی پیاکیج کا مطالبہ

میدک کیلئے 100 کروڑ روپئے خصوصی پیاکیج کا مطالبہ

ضلع کے مسائل سے متعلق چیف منسٹر کو مکتوب کی روانگی ، کانگریس لیڈر ایم موہن گوڑ کا بیان
میدک۔ 15 نومبر (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ضلع میدک کو حالیہ جدید تشکیل کردہ اضلاع میں ہیڈکوارٹرس کا درجہ عطا کیا گیا ہے جس کا چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ اور مقامی رکن اسمبلی و ریاستی ڈپٹی اسپیکر اسمبلی ایم پدمادیویندر ریڈی کا یقیناً اظہار تشکر کیا جانا چاہئے۔ یہاں کے عوام کا دیرینہ حل طلب مسئلہ کی یکسوئی تو ہوگئی لیکن اب یہاں غور طلب مسئلہ یہ ہے کہ ضلع کی تین حصوں میں تقسیم کے بعد صنعتی، تعلیمی و معاشی حالات کا جائزہ لیا جائے تو تین اضلاع سنگاریڈی، سدی پیٹ میں ضلع میدک کو تیسرا مقام حاصل ہوگیا یعنی کے یہ علاقہ انتہائی پسماندہ ہوگیا۔ اب ضلع کا احاطہ کیا جائے تو یہاں کوئی میجر انڈسٹری نہیں، Minor انڈسٹری بھی نہیں۔ کوئی آبی پراجیکٹ نہیں۔ ضلع کے طلبہ کو تعلیمی میدان میں آگے بڑھنے کیلئے کوئی سہولت نہیں۔ تقسیم کے بعد روزگار حاصل کرنے کے مواقع صفر ہیں۔ حرکیاتی سینئر قائد سابق نائب صدر ضلع کانگریس و سابق بلدی کونسلر ایم موہن گوڑ نے نمائندہ سیاست میدک سے بات چیت کرتے ہوئے ان خیالات کا اظہار کیا۔ انہوں نے ریاستی وزیراعلیٰ سے اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ضلع میدک کو پسماندگی کے اندھیرے سے نکالنے کیلئے سب سے پہلے علیحدہ طور پر 100 کروڑ کے حصول پیاکیج کی سخت ضرورت ہے۔ موہن نے کہا کہ انہوں نے اپنے خیالات کو قلمبند کرکے میدک کی ترقی سے متعلق ایک تفصیلی مکتوب ریاستی وزیراعلیٰ کے چندر شیکھر راؤ کو روانہ کیا ہے۔ اسی طرح آئی ٹی وزیر کے ٹی راما راؤ، وزیر آبپاشی ٹی ہریش راؤ، مقامی رکن اسمبلی و ڈپٹی اسپیکر اسمبلی ایم پدمادیویندر ریڈی کے علاوہ چیف سیکریٹری ٹو گورنمنٹ آف تلنگانہ راجیو شرما کو بھی روانہ کردیا ہے۔ انہوں نے اپنی بات کا سلسلہ جاری رکھتے ہوئے کہا کہ ضلع میدک کو ابتداء ہی سے ریاست کے نقشہ ہی میں نہیں ملک کے نقشہ میں کافی شہرت حاصل ہے۔ انہوں نے کہا کہ اب اس علاقہ کو مزید شہرت حاصل ہوگی۔ موہن نے آخر میں انٹرنیشنل انڈسٹریز کے قیام کی طرف چیف منسٹر کو توجہ دلائی اور کہا کہ سنگاریڈی ضلع کی طرح میدک ضلع اور سدی پیٹ ضلع کے بیروزگار تعلیم یافتہ نوجوانوں کو 85% کوٹہ میں شامل کریں یعنی اس پراجیکٹ میں تقررات کیلئے میدک اور سدی پیٹ سے تعلق رکھنے والوں کو غیرمقامی کے بجائے مقامی قرار دینے کا مطالبہ کیا۔ اس خصوص میں وزیراعلیٰ کو چاہئے کہ تقررات کے عمل پر گہری نظر رکھتے ہوئے علیحدہ خصوصی جی او کی اجرائی عمل میں لاتے ہوئے میدک اور سدی پیٹ کو لوکل کوٹہ میں شامل کریں تاکہ پسماندہ ضلع میدک کے نوجوانوں کا بیروزگاری مسئلہ دور ہوسکے۔ انہوں نے کہا کہ نمس کے قیام کے بعد ساری ریاست میں ضلع سنگاریڈی ایک دولت مند ضلع کی حیثیت سے ابھر جائے گا۔ آخر میں انہوں نے یہاں قائم ہونے والے انٹرنیشنل انڈسٹریز پارک میں بھرتیوں کے موقع پر میدک اور سدی پیٹ اضلاع سے تعلق رکھنے والوں کو لوکل قرار دیتے ہوئے خصوصی احکامات جاری کرنے کے ساتھ ضلع کی ترقی کیلئے 100 کروڑ روپئے کا علیحدہ پیاکیج منظور کرنے کا بھی مطالبہ کیا۔

TOPPOPULARRECENT