Saturday , December 15 2018

میدک کے رکن اسمبلی تلگودیشم سے مستعفی ،بی جے پی سے مفاہمت پر اعتراض

حیدرآباد 6 اپریل (این ایس ایس ) میدک کے تلگودیشم رکن اسمبلی ایم ہنمنت راو نے مفاہمت کے تحت ملکاجگیری کی نشست بی جے پی کو دیئے جانے پر احتجاج کرتے ہوئے اپنی پارٹی سے استعفی دے دیا۔ ہنمنت راو نے آج اپنے حامیوں کے ساتھ تلگودیشم پارٹی کے صدر چندرا بابونائیڈو سے ان کے گھر ملاقات کی بعدازاں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ’’چن

حیدرآباد 6 اپریل (این ایس ایس ) میدک کے تلگودیشم رکن اسمبلی ایم ہنمنت راو نے مفاہمت کے تحت ملکاجگیری کی نشست بی جے پی کو دیئے جانے پر احتجاج کرتے ہوئے اپنی پارٹی سے استعفی دے دیا۔ ہنمنت راو نے آج اپنے حامیوں کے ساتھ تلگودیشم پارٹی کے صدر چندرا بابونائیڈو سے ان کے گھر ملاقات کی بعدازاں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ’’چندرا بابو نائیڈو نے مجھے ملکاجگیری نشست دینے کا وعدہ کیا تھا لیکن مفاہمت کے تحت یہ نشست بی جے پی کو دی گئی ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ اب وہ کسی دوسری پارٹی میں شرکت نہیں کریں گے بلکہ ملکاجگیری سے بحیثیت آزاد امیدوار مقابلہ کریں گے ۔ ایم ہنمنت راو نے کہا کہ گذشتہ 6 ماہ سے ان کے خلاف سازش کی جارہی تھی اور انہیں قربانی کا بکرا بنانے کیلئے سازش کی گئی ۔ ہنمنت راو نے کہا کہ ’’نائیڈو اگرچہ میرے سیاسی گرو ہیں میں نے ان سے ملاقات کی اور درخواست کی کہ وہ نا انصافی کی گریز کریں اور میرے ساتھ انصاف کیا جائے لیکن انہوں نے میری بات نہیں مانی ، میں نے پارٹی سے استعفی دیدیا اور بحیثیت آزاد امیدوار ملکاجگیری سے مقابلہ کررہا ہوں۔

TOPPOPULARRECENT