Monday , December 11 2017
Home / Top Stories / میرا تقررحکومت سعودی عرب نے کیا۔ حسین شریف کی وضاحت

میرا تقررحکومت سعودی عرب نے کیا۔ حسین شریف کی وضاحت

میں صرف سعودی حکومت کو جوابدہ،کسی اور کو جواب طلب کرنے کا اختیار نہیں
حیدرآباد۔/19جولائی، ( سیاست نیوز) ناظر رباط مکہ مکرمہ حسین محمد الشریف نے واضح کیا کہ وہ حکومت سعودی عرب کی جانب سے مقرر کردہ ناظر ہیں اور وہ صرف وہاں کی حکومت کو جوابدہ ہیں۔ عازمین کی قرعہ اندازی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے واضح کیا کہ وہ گذشتہ 21سال سے بحیثیت ناظر خدمات انجام دے رہے ہیں اور ان کا تقرر نظام اوقاف کمیٹی نے نہیں کیا بلکہ حکومت سعودی عرب نے کیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ان کے والد طویل عرصہ تک فرائض انجام دیتے رہے اور ان کے تقرر میں نواب خیر الدین خاں کا اہم رول رہا اور وہ ہمیشہ نواب صاحب کو قدر و احترام کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔ حسین شریف نے کہا کہ اوقاف کمیٹی سے تنازعہ ختم ہوچکا ہے اور دونوں کے تعلقات مزید مستحکم ہوچکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گذشتہ 21برسوں میں انہوں نے 35000 سے زائد حجاج کرام اور معتمرین کی خدمت انجام دی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ نظام کے 7 رباط ہیں جن میں حکومت سعودی عرب کی جانب سے 4 رباطوں کا معاوضہ طئے کیا گیا ہے۔ حسین شریف کے تحت 3رباطیں ہیں جن میں دلاور النساء بیگم کی رباط، افضل الدولہ کی رباط اور حسینی صاحبہ کی رباط شامل ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ افضل الدولہ رباط کے سلسلہ میں وہ آئندہ سال خوشخبری سنائیں گے۔ حسین شریف نے کہا کہ وہ اللہ کے مہمانوں کی خدمت کو اپنی خوش قسمتی تصور کرتے ہیں اور انہوں نے گذشتہ سال سے مفت کھانے کا انتظام کیا ہے جس پر عازمین حج نے کافی دعائیں دیں۔ انہوں نے کہا کہ حجاج کرام اور معتمرین نظام حیدرآباد اور ان کے خاندان کیلئے بھی ہمیشہ دعاگو رہتے ہیں اور وہ خود بھی نظام اور ان کی فیملی کیلئے خصوصی دعاؤں کی اپیل کرتے ہیں۔ انہوں نے وضاحت کی کہ وہ اس خدمت کیلئے اللہ رب العزت کے بعد حکومت سعودی عرب کو جوابدہ ہیں اور کوئی اور ادارہ ان سے جواب طلب نہیں کرسکتا۔ حسین شریف نے کہا کہ رباط میں قیام کے سلسلہ میں سابق میں جو دشواریاں تھیں انہوں نے اسے ختم کردیا ہے اور نظام اسٹیٹ کے 21 اضلاع کے عزیزیہ زمرہ کے تمام عازمین اس قرعہ اندازی میں از خود شامل کرلئے جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اضلاع سے حیدرآباد پہنچ کر درخواست داخل کرنے کی تکالیف کو ختم کردیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج جن درخواستوں کی قرعہ اندازی کی جارہی ہے ان میں کئی درخواست گذار خود اس بات سے واقف نہیں کہ وہ منتخب ہوچکے ہیں۔ حج کمیٹی انہیں منتخب ہونے کی اطلاع دیتی ہے۔ حسین شریف نے تلنگانہ حکومت اور بطور خاص ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی کی ستائش کی جنہوں نے اس تعطل کو ختم کرنے میں اہم رول ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ سعودی عرب کی رباطوں کے معاملہ کی یکسوئی کیلئے انہیں کسی کے تعاون یا مدد کی ضرورت نہیں بلکہ وہ صرف دعاؤں کیلئے درخواست کرتے ہیں۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ آنے والے برسوں میں مزید عمارتوں کا حصول یقینی ہوگا اور نظام اسٹیٹ کے تمام عازمین کیلئے مفت قیام کی سہولت حاصل ہوجائے گی۔ حسین شریف نے بتایا کہ ان کے ساتھ 3 فرزندان بھی عازمین حج کی خدمت میں مصروف ہیں اور آگے بھی وہ اس کام کو جاری رکھیں گے۔

TOPPOPULARRECENT