میرٹ کم مینس اسکالر شپس کیلئے تجدید درخواستوں کی آخری تاریخ 15 نومبر مقرر

حیدرآباد۔29۔اکتوبر (سیاست نیوز) مرکزی حکومت کی اسکالرشپ کے سلسلہ میں تلنگانہ اور آندھراپردیش کے اقلیتی طلبہ کی جانب سے داخل کردہ پری میٹرک ، پوسٹ میٹرک اور میرٹ کم مینس کیلئے مقررہ نشانہ سے زیادہ طلبہ نے درخواستیں داخل کی ہیں۔ مینجنگ ڈائرکٹر اقلیتی فینانس کارپوریشن پروفیسر ایس اے شکور نے بتایا کہ درخواستوں کی جانچ کا کام جاری ہ

حیدرآباد۔29۔اکتوبر (سیاست نیوز) مرکزی حکومت کی اسکالرشپ کے سلسلہ میں تلنگانہ اور آندھراپردیش کے اقلیتی طلبہ کی جانب سے داخل کردہ پری میٹرک ، پوسٹ میٹرک اور میرٹ کم مینس کیلئے مقررہ نشانہ سے زیادہ طلبہ نے درخواستیں داخل کی ہیں۔ مینجنگ ڈائرکٹر اقلیتی فینانس کارپوریشن پروفیسر ایس اے شکور نے بتایا کہ درخواستوں کی جانچ کا کام جاری ہے اور بہت جلد اسکالرشپ کی رقم کی اجرائی کا آغاز ہوجائے گا۔ تعلیمی سال 2014-15 ء کیلئے تینوں زمروں میں دونوں ریاستوں میں مقررہ نشانہ سے کئی ہزار زائد درخواستیں وصول ہوئی ہیں۔ لہذا مرکزی وزارت اقلیتی بہبود کی جانب سے مقرر کردہ نشانہ میں اضافہ کیلئے کوشش کی جارہی ہے۔ اگر مرکزی حکومت ہر ریاست کو مقرر کردہ نشانہ پر قائم رہے تو اس صورت میں آندھراپردیش کے کئی ہزار درخواست گزار طلبہ اسکالرشپ سے محروم رہیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ تلنگانہ میں پری میٹرک اسکالرشپ کیلئے 66789 کا نشانہ مقرر کیا گیا تھا لیکن ایک لاکھ 11 ہزار 887 درخواستیں وصول ہوئیں جبکہ آندھراپردیش میں 61389 کا نشانہ تھا اور ایک لاکھ 35 ہزار 332 درخواستیں وصول ہوئی ہیں۔ پری میٹرک کے تحت درخواستوں کی ادخال کی تاریخ میں ایک مرتبہ توسیع بھی کی گئی تھی ۔ موصولہ درخواستوں میں میرٹ کی بنیاد پر امیدواروں کا انتخاب کیا جائے گا۔ پوسٹ میٹرک اسکالرشپ کے تحت تلنگانہ کا نشانہ 9948 تھا جبکہ 15619 درخواستیں وصول ہوئیں۔ آندھراپردیش میں پوسٹ میٹرک کا نشانہ 8091 تھا جبکہ 9187 درخواستیں وصول ہوئیں۔ میرٹ کم مینس کے تحت تلنگانہ میں 1194 کا نشانہ تھا جبکہ 3715 درخواستیں داخل کی گئیں۔ آندھراپردیش میں یہ نشانہ 971 تھا جبکہ 2739 درخواستیں داخل ہوئیں۔ انہوں نے بتایا کہ میرٹ کم مینس کے تحت تجدید درخواستوں کے ادخال کی آخری تاریخ 15 نومبر ہے جبکہ فریش درخواستوں کیلئے تینوں زمروں کی آخری تاریخ ختم ہوچکی ہے۔ انہوں نے بعض درخواست گزاروں کی جانب سے درخواستیں قبول نہ کرنے سے متعلق شکایات کی تردید کی اور کہا کہ آن لائین درخواستوں کے ادخال کے فوری بعد درخواستوں کو ذمہ داری تھی کہ وہ کارپوریشن کے دفاتر میں اپنی درخواستیں داخل کردیں۔ انہوں نے بتایا کہ تلنگانہ میں تینوں زمروں کے تحت 77931 طلبہ کو اسکالرشپ کی اجرائی کا نشانہ مرکزی حکومت نے مقرر کیا جبکہ جملہ ایک لاکھ 31 ہزار 221 درخواستیں وصول ہوئی ہیں۔

اسی طرح آندھراپردیش میں تینوں اسکالرشپ کے تحت جملہ نشانہ 70415 تھا جبکہ ایک لاکھ 47 ہزار 258 درخواستیں داخل ہوئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ریاستوں میں درخواستیں مقررہ نشانہ سے کہیں زیادہ ہیں۔ اسی دوران تعلیمی سال 2013-14 ء کے اسکالرشپ کی اجرائی کا عمل تقریباً مکمل ہوچکا ہے۔ پری میٹرک زمرہ کے تحت جملہ 61.70 کروڑ روپئے دولاکھ 58 ہزار 912 طلبہ میں جاری کئے گئے ۔ اس زمرہ کے تحت ریاستی حکومت کو 20.57 کروڑ روپئے میاچنگ گرانڈ کے طور پر جاری کرنے ہیں۔ اگر تلنگانہ حکومت یہ رقم جاری کردیں تو مزید طلبہ کو اسکالرشپ دی جائے گی۔ پوسٹ میٹرک اسکالرشپ کے زمرہ میں 17384 طلبہ میں 10.95 کروڑ روپئے اور میرٹ کم مینس کے تحت 1492 طلبہ میں 4.20 کروڑ روپئے جاری کئے گئے۔ پری میٹرک اور میرٹ کم مینس زمروں میں فینانس کارپوریشن نے اسکالرشپ کی تقسیم کا نشانہ مکمل کرلیا ہے جبکہ پوسٹ میٹرک اسکالرشپ میں 1922 طلبہ میں ایک لاکھ 2 ہزار روپئے کی اجرائی باقی ہے ۔ توقع ہے کہ آئندہ دو دن میں یہ رقم جاری کر

TOPPOPULARRECENT