Wednesday , October 17 2018
Home / شہر کی خبریں / میرے انتخابات میں حصہ لینے کا فیصلہ پارٹی کرے گی: کودنڈارام

میرے انتخابات میں حصہ لینے کا فیصلہ پارٹی کرے گی: کودنڈارام

نشستوں پر مفاہمت اندرون دو یوم ممکن، مشترکہ ایجنڈے کی تیاری پر مشاورت
حیدرآباد۔11 اکٹوبر (سیاست نیوز) تلنگانہ جنا سمیتی کے صدر پروفیسر کودنڈارام نے کہا کہ کانگریس پارٹی سے انتخابی مفاہمت محض نشستوں کے لیے نہیں کی جارہی ہے اور انتخابی مفاہمت بہت جلد طے ہوجائے گی۔ کودنڈارام نے اس بات کی وضاحت کی کہ انہوں نے کبھی یہ نہیں کہا کہ انتخابات میں وہ حصہ نہیں لیں گے تاہم کس حلقے سے مقابلہ کرنا ہے، اس کا فیصلہ ابھی باقی ہے۔ میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کودنڈارام نے کہا کہ عظیم اتحاد میں شامل جماعتوں کے درمیان مشترکہ حکمت عملی، مشترکہ پروگرام کی تیاری اور جناسمیتی کو باوقار مقام دیئے جانے پر مذاکرات جاری ہیں۔ عظیم اتحاد میں شامل جماعتیں مشترکہ لائحہ عمل کے تحت مقابلہ کریں گی اور اس سلسلہ میں ایک دو دن میں کوئی فیصلہ ہوجائے گا۔ کودنڈارام نے کہا کہ عظیم اتحاد میں شامل جماعتیں ایک طاقتور ایجنڈے کے ساتھ عوام کے سامنے پیش ہوں گے۔ انہوں نے اعتراف کیا کہ نشستوں کے تقسیم کے مسئلہ پر تعطل ابھی برقرار ہے اور اس مسئلہ پر رازداری رکھی گئی ہے۔ ہم نے اسی دن نشستوں کے بارے میں برسر عام اظہار خیال نہیں کیا۔ جب بھی اس مسئلہ پر بات چیت ہوگی ہم اپنی تجاویز پیش کریں گے۔ ہم نے کبھی بھی نشستوں کی تعداد کے بارے میں مطالبہ نہیں کیا ہے۔ آئندہ دو دنوں میں ان تمام مسائل کی یکسوئی ہوجائے گی۔ انہوں نے کہا کہ انتخابات میں حصہ لینے کے مسئلہ پر پارٹی فیصلہ کرے گی۔ اسی دوران ماہر قانون پراہلاد نے جناسمیتی میں شمولیت اختیار کرلی۔ انہوں نے تلنگانہ تحریک کے دوران جوائنٹ ایکشن کمیٹی میں اہم رول ادا کیا تھا۔ تاہم کودنڈارام سے اختلافات کے بعد وہ علیحدہ ہوگئے۔ پراہلاد نے میڈیا کے نمائندوں سے کہا کہ ٹی آر ایس اعلی قیادت نے پبلک پراسیکیوٹر کے عہدے کا لالچ دیتے ہوئے کودنڈارام پر تنقید کرنے کی خواہش کی تھی۔ کودنڈارام نے بتایا کہ عظیم اتحاد میں بہت جلد زیر تصفیہ مسائل کی یکسوئی کرلی جائے گی۔ عظیم اتحاد کا مقصد عوام کو جمہوری طرز پر حکمرانی فراہم کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اتحاد مضبوط رکھنے کے لیے ضروری ہے کہ پارٹیاں لچکدار رویہ اختیار کریں۔ نشستوں کی تقسیم کا مسئلہ بہت جلد حل ہوجائے گا۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ نشستوں اور ایجنڈے کے مسئلہ پر ان کی توقعات کے مطابق فیصلہ ہوگا۔ انہوں نے وضاحت کی کہ بی جے پی سے انتخابی مفاہمت کے بارے میں کوئی تجویز زیر غور نہیں ہے۔ یہ سوال کے جواب میں کودنڈارام نے کہا کہ انتخابات میں حصہ نہ لینے کا انہوں نے کبھی بھی بیان نہیں دیا ہے۔ مقابلہ کہاں سے کرنا ہے اس کا فیصلہ پارٹی کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ جنا سمیتی اتحاد میں قابل احترام حصہ داری کا مطالبہ کررہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT