Thursday , November 23 2017
Home / دنیا / میعاد کے اختتام پر تبدیلی ماحولیات پیرس معاہدہ

میعاد کے اختتام پر تبدیلی ماحولیات پیرس معاہدہ

بانکی مون کا کارنامہ ‘ میعاد کے آخری دو ماہ میں معتمد عمومی نے معاہدہ کے قواعد و ضوابط کا تعین کردیا
اقوام متحدہ۔27ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) بین الاقوامی قواعد جو تبدیلی ماحولیات معاہدہ کے قواعد و ضوابط مقرر کرنے کے مرحلہ میں آگئے ہیں ‘ جاریہ ماہ پیرس میں منعقد کئے گئے تھے ۔ اقوام متحدہ  عام طور پر اس سلسلہ میں قیادت کا منصب نہیں سنبھالتا لیکن معتمد عمومی بانکی مون نے مرکزی کردار ادا کیا اور کامیاب ثابت ہوئے ۔  ایسا پہلا کبھی نہیں ہوا تھا ‘ تقریباً 9سال گذرنے کے بعد بحیثیت معتمد عمومی اپنے ابتدائی دنوں میں بانکی مون نے عالمی قائدین کو حیرت زدہ کردیا تھا جب کہ انہوں نے اپنے ایجنڈہ میں عالمی حدت میں اضافہ کو سرفہرست رکھا تھا ‘ اب اپنے عہدہ کی میعاد کے آخری سال میں انہوں نے پیرس میں نمایاں کردار ادا کیا اور اعلیٰ سطحی قیادت پر زور دیا کہ اس چوٹی کانفرنس میں برفانی دریاؤں ( گلیشیئرس)  اور برف پوش جزیروں کے معدوم ہونے کے خطروں کو ایجنڈہ میں سرفہرست رکھا جائے ۔ یہ ایک جذباتی لمحہ تھا ۔
پیرس میں اخباری نمائندوں کو انٹرویو دیتے ہوئے بانکی مون نے کئی افراد بشمول اقوام متحدہ ‘ امریکہ ‘ چین ‘ ہندوستان اور فرانس کے قائدین کو خراج عقیدت پیش کیا ۔ انہوں نے خود اپنے کردار کا بھی قابل فخر انداز میں تذکرہ کیا ۔ دنیا کا کوئی بھی دوسرا قائد  اپنی میعاد میں تبدیلی ماحولیات مسئلہ کا چمپئن بن کر نہیں ابھرا تھا ۔ بانکی مون نے کہا کہ انہوں نے اپنے عہدہ کا بھرپور فائدہ اٹھایا اور زیادہ تر وقت اس مسئلہ کیلئے صرف کیا ۔ یہ سابق جنوبی کوریائی وزیر خارجہ کی پالیسی میں نمایاں تبدیلی تھی ۔ قبل ازیں وزیر خارجہ کوریا کی حیثیت سے انہوں نے اقوام متحدہ کے معتمد عمومی بننے کا تصور بھی نہیں کیا تھا لیکن 2007ء میں انہیں معتمد عمومی منتخب کرلیا گیا جب کہ ان کے ملک اور شمالی کوریا میں زبردست صف آرائی جاری تھی ۔ بانکی مون نے اپنے طویل کریئر کے دوران تبدیلی ماحولیات کے موضوع پر توجہ دیتے ہوئے اس کی طرف دنیا بھر کی توجہ مبذول کروائی اور عالمی مسائل کے بارے میں اپنی وسیع النظری کا ثبوت دیا ۔ معتمد عمومی کی حیثیت سے حلف برداری سے دو ہفتہ پہلے اقوام متحدہ کے اُس وقت کے معتمد عمومی ٹم ورتھ  نے کہا تھا کہ ان کی اولین ترجیحات تبدیلی ماحولیات اور خواتین کو بااختیار بنانا ہے ۔ بانکی مون نے ان کی ان ترجیحات کو برقرار رکھا اور عالمی حدت میں اضافہ کے مسئلہ پر توجہ مرکوز کی ۔ وہ اس مسئلہ سے مسلسل وابستہ رہے اور ایک ایسے وقت جب کہ تبدیلی ماحولیات مقبول عام موضوع نہیں تھا ۔ انہوں نے اس کو دنیا بھر کا مرکزی موضوع بنادیا ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT