Wednesday , December 13 2017
Home / شہر کی خبریں / میٹرو ریل پراجکٹ کی تعمیر میں تاخیر سے خسارہ،اخراجات کی پابجائی کیلئے کمپنی کی حکومت کو درخواست

میٹرو ریل پراجکٹ کی تعمیر میں تاخیر سے خسارہ،اخراجات کی پابجائی کیلئے کمپنی کی حکومت کو درخواست

حیدرآباد ۔ /20 اکٹوبر (سیاست نیوز) میٹرو ریل پراجکٹ کی تعمیر میں تاخیر کی وجہ سے 3,756 کروڑ کا خسارہ ہورہا ہے اور تعمیراتی کمپنی ایل اینڈ ٹی نے تاخیر کی وجہ سے ہونے والے نقصان کی پابجائی کیلئے حکومت کو درخواست دی گئی ۔ تاہم حکومت سے کمپنی کو کوئی جواب موصول نہیں ہوا ہے ۔ حیدرآباد میٹروپراجکٹ کو عالمی سطح کے معیار کے تحت تعمیر کیلئے اڈوانسڈ ٹکنالوجی کا استعمال کیا جارہا ہے اور اس پراجکٹ کی تعمیر مقررہ وقت میں مکمل نہیں ہورہی ہے جس کی وجہ مزید 17 ماہ کا وقت مقرر کیا گیا ہے ۔ اس کے باوجود اس پراجکٹ کی تعمیر میں چند مسائل درپیش ہیں ۔ اس پراجکٹ کا آغاز ہوئے 5 برس کا عرصہ گزرنے کے باوجود آمدنی کی صورت میں میٹرو ریل دستیاب نہیں ہوسکی ہے ۔ جس کی وجہ تعمیری کمپنی کی جانب سے تیار کردہ شیڈول خلط ملط ہوگیا ہے اور پانچ برسوں سے کمپنی کی جانب سے صرف سرمایہ کاری ہورہی ہے مگر کسی طرح آمدنی نہ ہونے کی وجہ سے کمپنی کو مالی مشکلات درپیش ہورہی ہیں ۔ شہر حیدرآباد کیلئے کافی اہم سمجھے جانے والے اس پراجکٹ کو سرکاری و خانگی شراکت داری ( پی پی پی ) سے شروع کیا گیا اور معاہدے کے مطابق 5 برس کے اندر پراجکٹ تیار ہونا ہے ۔ پراجکٹ کے تعمیراتی کاموں کو آگے بڑھانے میٹرو لائن کی تنصیب کیلئے ’’رائٹ آف وے ‘‘ فراہم کرنے کی ذمہ داری حکومت پر ہے ۔ 72 کیلو میٹر طویل تین کاریڈار میں شروع کردہ میٹرو پراجکٹ میں ریاستی حکومت کی جائیداد کے ساتھ ساتھ مرکزی حکومت کی جائیداد ہیں اور خاص طور پر مرکزی حکومت کے قبضہ میں واقع جائیداد کنٹونمنٹ بورڈ کی زمینات ، محکمہ ریلوے اور محکمہ دفاع کی زمینات ہیں اور ان زمینات کے حصول میں برسوں کا وقت لگنے کی وجہ سے مقررہ وقت کے اندر پراجکٹ کی تکمیل نہ ہوپانے کا کمپنی کی جانب سے حکومت کو تحریر کردہ خط میں واضح کیا گیا ہے اور حکومت کی جانب سے ہونے والے تاخیر کی وجہ سے عائد مالی بوجھ 3765 کروڑ روپئے برداشت کرنے حکومت سے گزارش کی گئی ہے ۔ پراجکٹ کے تخمینہ کے مطابق خرچ کرنے کے باوجود پراجکٹ کی عدم تکمیل کی وجہ سے تاخیر ہے اور اس تاخیر کی وجہ سے بقیہ پراجکٹ کی تکمیل کیلئے عائد ہونے والے زائد بوجھ کو حکومت برداشت کرے کیونکہ کمپنی زائد بوجھ برداشت کرنے کی متحمل نہیں ہے ۔ کمپنی کے عہدیداران کا کہنا ہے کہ حکومت کو خط لکھ کر کئی دن ہوگئے مگر تاحال حکومت کی جانب سے کوئی جواب نہیں آیا ہے ۔ دریں اثناء حکومت 30 کیلو میٹر تک میٹرو کا افتتاح انجام دینے کی جلد بازی میں ہے ۔ ان حالات میں فوری طور پر کوئی بھی فیصلہ لینے سے قاصر ہیں ۔
پراجکٹ کا آغاز : /5 جولائی 2012 ء
پراجکٹ کی تکمیل کی مقررہ تاریخ : /5 جولائی 2017 ء
اضافہ شدہ وقت : 17 ماہ
پراجکٹ کا تخمینہ 14.132 کروڑ اور اس میں مرکز کا حصہ 1.458 کروڑ اور ریاستی حکومت کا حصہ 3,000 کروڑ
تاحال کیا گیا خرچ : 15,872 کروڑ ، مکمل کئے گئے کام : 85%

TOPPOPULARRECENT