Friday , April 27 2018
Home / شہر کی خبریں / میٹرو ریل کا 28نومبر کو مودی افتتاح کریںگے

میٹرو ریل کا 28نومبر کو مودی افتتاح کریںگے

30کلومیٹر پر مشتمل پہلے مرحلہ کا پراجکٹ مکمل ‘ ٹریفک مسئلہ حل ہونے کی توقع:کے ٹی آر
حیدرآباد۔13 نومبر (سیاست نیوز) وزیر انفارمیشن ٹیکنالوجی کے ٹی راما راؤ نے کہا کہ میٹرو ریل کے پہلے مرحلے کا 28 نومبر کو وزیراعظم نریندر مودی افتتاح کریں گے۔ تلنگانہ اسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران کے ٹی آر نے بتایا کہ میٹرو ریل کے افتتاح کے سلسلے میں وزیراعظم کو مدعو کیا گیا ہے، تاہم وزیراعظم کے دفتر سے اس سلسلے میں سرکاری طور پر توثیق ابھی باقی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں پہلی مرتبہ طویل مسافت کی میٹرو ریل کا آغاز کیا جارہا ہے اور تلنگانہ حکومت کو اس کی تکمیل کا اعزاز حاصل ہے۔ ملک کی تاریخ میں پہلی مرتبہ 30 کیلومیٹر مسافت کی میٹرو ریل شروع کی جارہی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ میٹرو ریل کے کاموں کیلئے 3,000 کروڑ روپئے مختص کئے گئے اور ابھی تک 2,240 کروڑ روپئے خرچ کئے جاچکے ہیں۔ مرکزی حکومت نے 1,458 کروڑ روپئے کی شراکت سے اتفاق کیا ہے جس میں سے 958 کروڑ روپئے جاری کردیئے گئے۔ میٹرو ریل کے پہلے مرحلے میں جو 30 کیلومیٹر پر مشتمل ہے ، جاریہ ماہ کے اختتام تک اس کا آغاز عمل میں آئے گا۔ پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے تحت میٹرو ریل دُنیا کا سب سے بڑا پراجیکٹ ہے جسے ایل اینڈ ٹی کمپنی انجام دے رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ میٹرو کو مکمل طور پر کارکرد بنانے کے لئے 57 ریل گاڑیوں کی ضرورت ہے اور یہ تمام گاڑیاں تلنگانہ پہنچ چکی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میٹرو ریل تمام نقائص سے پاک پراجیکٹ ہوگا اور اس سے عوام کو سہولت ہوگی۔ شہر میں ٹریفک کے دباؤ کو کم کرنے کیلئے یہ پراجیکٹ معاون ثابت ہوسکتا ہے۔ کے ٹی آر نے پراجیکٹ کی تکمیل میں تاخیر سے متعلق بی جے پی کے الزامات کو مسترد کردیا اور کہا کہ میٹرو کے باقی مرحلوں کا کام بھی آئندہ سال مکمل کرلیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر مہاراشٹرا دیویندر فڈنویس نے چیف منسٹر کے سی آر سے بات چیت کرتے ہوئے میٹرو ریل کی 2 ٹرینوں کو حوالے کرنے کی درخواست کی جس پر مہاراشٹرا کو 2 ٹرینیں حوالے کی گئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دہلی میٹرو کے عہدیداروں نے حیدرآباد میٹرو پراجیکٹ کا دورہ کرتے ہوئے جاریہ کاموں کی ستائش کی ہے۔ کے ٹی آر نے کہا کہ تلنگانہ ریاست کی تشکیل کے بعد حکومت نے میٹرو ریل کی روٹ میں بعض تبدیلیوں کی سفارش کی تاکہ عوام کو تکالیف سے محفوظ رکھا جائے۔ میٹرو ریل کے باقی مرحلوں کی پیشرفت سے متعلق بی جے پی ارکان کے سوال پر کے ٹی آر نے کہا کہ عہدیداروں نے سروے کا کام مکمل کرلیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ رائے گری ریلوے اسٹیشن کو ’’یادادری‘‘ سے موسوم کرتے ہوئے ترقی دی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ تلنگانہ ریاست کے قیام کے بعد ایم ایم ٹی ایس کے دوسرے مرحلے کا آغازہوا ہے اور دوسرے مرحلے کے کاموں کیلئے 817 کروڑ روپئے خرچ کئے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گھٹکیسر سے رائے گری تک ایم ایم ٹی ایس کو توسیع دی جائے گی۔ یادادری کو بھکتوں کی بڑی تعداد جاتی ہے لہذا انہیں سہولت فراہم کرنے کیلئے ایم ایم ٹی ایس کی توسیع کامنصوبہ ہے۔ انہوں نے تیقن دیا کہ جس قدر جلد ممکن ہوسکے، ایم ایم ٹی ایس کے دوسرے مرحلے کا کام مکمل کرلیا جائے گا۔ بی جے پی ارکان کشن ریڈی، ڈاکٹر لکشمن اور رامچندرا ریڈی نے کاموں میں تاخیر کی شکایت کی اور تجویز پیش کی کہ ایم ایم ٹی ایس ٹرین سرویس کو مضافاتی علاقوں اور شہر کے اطراف کے اضلاع تک توسیع دی جائے۔ کشن ریڈی نے کہا کہ ایم ایم ٹی ایس کے آغاز سے عوام کو کافی فائدہ ہوا ہے لہذا اسے مزید توسیع دینے کی ضرورت ہے۔ تانڈور، وقارآباد اور میڑچل تک یہ ٹرین چلائی جاسکتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT