Monday , May 21 2018
Home / شہر کی خبریں / میٹرو ٹرین کی شروعات پر نئے شہر کی عوام میں مسرت ، پرانے شہر کی عوام مایوس

میٹرو ٹرین کی شروعات پر نئے شہر کی عوام میں مسرت ، پرانے شہر کی عوام مایوس

حکومت اور مقامی نمائندوں کی لاپرواہی پر عوام کی اظہار ناراضگی
حیدرآباد ۔ 27 ۔ نومبر : ( سیاست نیوز ) : میٹرو ٹرین کے آغاز کو لے کر نئے شہر کی عوام میں مسرت کی لہر دوڑ چکی ہے وہیں پرانے شہر کی عوام میں مایوسی دکھائی دے رہی ہے ۔ اس سلسلہ میں روزنامہ سیاست نے عوامی رائے جاننے کی کوشش کی ہے جس پر عوام نے اپنے ملے جلے ردعمل کا اظہار کیا ہے ۔ پرانے شہر کی عوام کا کہنا تھاکہ میٹرو ٹرین سے محروم کرتے ہوئے حکومت نے پرانے شہر کے ساتھ سوتیلا سلوک کیا ہے جب کہ نئے شہر اورگریٹر حیدرآباد پر حکومت مہربان ہے ۔ جب کہ پرانے شہر کی عوام بھی ٹیکس ادا کرنے والوں میں شامل ہے ۔ لیکن انہیں وہ سہولت حاصل نہیں ہے جو نئے شہر کے عوام کو حاصل ہے ۔ پرانے شہر سے میٹرو ٹرین کو غائب کردینے پر عوام نے حکومت اور پرانے شہر کے عوامی نمائندوں پر اپنی سخت ناراضگی و برہمی کا اظہار کیا ۔ پرانے شہر میں کئی تاریخی و یادگار عمارتیں ہیں جن کا نظارہ کرنے کے لیے بیرونی ممالک اور ملک کے مختلف ریاستوں سے سیاح جب کبھی حیدرآباد پہنچتے ہیں تو چارمینار اور مکہ مسجد کا نظارہ کیے بغیر واپس نہیں ہوتے لیکن حکومت نے میٹرو ٹرین کو پرانے شہر میں نہ چلاتے ہوئے بڑی نا انصافی کی ہے ۔ جناب فیض الدین اشرفی نے حیدرآباد میں میٹرو ریل کے آغاز پر خوشنودی کا اظہار کرتے ہوئے بتایا کہ کم وقت میں لوگ ایک مقام سے دوسرے مقام تک پہنچنے میں آسانیاں ہوں گی ۔ انہوں نے بتایا کہ ٹی آر ایس حکومت جس طرح میٹرو لائن پراجکٹ پر اپنا تعاون پیش کرنا تھا پیش نہ کرسکی اور بالکلیہ طور پر ریاستی حکومت نے میٹرو ٹرین کے حکام سے تعاون ہی نہیں کیا ۔ شیخ محمود کرشنا نگر نے کہا کہ شہر حیدرآباد میں میٹرو ٹرین کے آغاز سے ہی ٹریفک کو قابو میں رکھا جاسکتا ہے بلکہ پابندی وقت کا بھی احساس عوام میں پیدا ہوگا ۔ محمد نواب نے پرانے شہر میں میٹرو ٹرین کے آغاز کی مانگ کی ۔ جناب ایم اے واجد نے بتایا کہ پرانے شہر میں میٹرو ٹرین کا جو منصوبہ تھا وہ املی بن ، دارالشفاء ، پرانی حویلی ، منڈی میر عالم ، سلطان شاہی ، سے فلک نما تک جاری تھا مگر اس اقدام کو ایک منصوبے کے تحت روک دیا گیا۔ اس ٹرین کے آغاز سے شہر کے دور دراز مقامات پر جو نئی نئی کمپنیاں وجود میں آئی ہیں وہاں روزگار فراہم ہوگا ۔ جناب محمد نعیم نے کہا کہ میٹرو ٹرین کی حیدرآباد میں جو سہولت پیدا کی گئی ہے اس کی ستائش کی اور امید ظاہر کی کہ بہت جلد پرانے شہر سے میٹرو ٹرین کا آغاز ہوگا ۔ جناب عبدالقادر پاشاہ نے کہا کہ اس ٹرین سے ہر فرد کو اپنی منزل تک پہنچنے کی سہولت ہوگی ۔جناب طاہر شریف نے میٹرو ٹرین کو ایک خوش آئند اقدام قرار دیا اور بتایا کہ اس سے عوام اپنے وقت کی بچت کرپائیں گی اور کہا کہ پرانے شہر میں بھی اس ٹرین کا وجود بے حد ضروری ہے ۔ محمد مقیم ، محمد حمید الدین ، محمد رفیع اور دیگر نے بھی میٹرو ٹرین کے ذریعہ آنے جانے والوں کے لیے پارکنگ کی سہولت اسٹیشنوں کے ہاں مہیا کرے ۔۔

TOPPOPULARRECENT