Saturday , September 22 2018
Home / سیاسیات / میڈیا میں سیاسی جماعتوں ، کارپوریٹس پر تحدید ، ٹرائی کی تجویز

میڈیا میں سیاسی جماعتوں ، کارپوریٹس پر تحدید ، ٹرائی کی تجویز

نئی دہلی۔ 12 اگست ۔ ( سیاست ڈاٹ کام )خبروں اور تبصروں کے کثیرپہلو کو یقینی بنانے کی کوشش کے طورپر براڈکاسٹ ریگولیٹر ادارہ ٹرائی نے آج ٹیلی ویژن اور اخبار کے بزنس میں داخل ہونے والے سیاسی اداروں اور کارپوریٹ گھرانوں پر تحدید لگانے کی تجویز پیش کی ۔ اس نے یہ سفارش بھی کی کے کوئی واحد آزاد میڈیا ریگولیٹری اتھاریٹی ہونا چاہئے جو بنیادی ط

نئی دہلی۔ 12 اگست ۔ ( سیاست ڈاٹ کام )خبروں اور تبصروں کے کثیرپہلو کو یقینی بنانے کی کوشش کے طورپر براڈکاسٹ ریگولیٹر ادارہ ٹرائی نے آج ٹیلی ویژن اور اخبار کے بزنس میں داخل ہونے والے سیاسی اداروں اور کارپوریٹ گھرانوں پر تحدید لگانے کی تجویز پیش کی ۔ اس نے یہ سفارش بھی کی کے کوئی واحد آزاد میڈیا ریگولیٹری اتھاریٹی ہونا چاہئے جو بنیادی طورپر غیرمیڈیا کی ممتاز شخصیتوں پر مشتمل ہو اور جو ٹی وی اور پرنٹ میڈیا پر نظر رکھتے ہوئے ’’پیڈ نیوز ‘‘ ، ’’نجی معاملتوں ‘‘ اور ’’ادارتی آزادی‘‘ سے متعلق مسائل کا جائزہ لیتے ہوئے ضروری اقدامات کریں ۔ ٹرائی نے کہاکہ سیاسی ادارہ ، مذہبی ادارہ ، مجالس مقامی ، پنچایتی راج اور دیگر سرکاری ادارہ ، اور مرکزی و ریاستی حکومتی وزارتیں ، محکمہ جات ، کمپنیاں وغیرہ کو نشر و اشاعت اور ٹی وی چینل کے بزنس سے دور رکھنا چاہئے ۔ ٹیلی کام ریگولیٹری اتھاریٹی آف انڈیا (ٹرائی ) نے کہا ہے کہ اگر ان میں سے کسی آرگنائزیشن کو پہلے ہی اجازت دی جاچکی ہے تو اُس کیلئے صراحت کے ساتھ گنجائش فراہم کی جانی چاہئے ۔ میڈیا میں شامل ہونے والے کارپوریٹ گھرانوں کے بارے میں تبصرہ کرتے ہوئے ٹرائی نے کہاکہ ایسی صورت میں مفاد کا ٹکراؤ ہونے کے اندیشے رہتے ہیں ، اس لئے اتھاریٹی سفارش کرتی ہے کہ میڈیا میں شامل ہونے والے کارپوریٹس پر ملکیتی تحدیدات ہونے چاہئے اور اس ضمن میں حکومت اور ریگولیٹری اتھاریٹی کو سنجیدگی سے ضروری اقدامات کرنے چاہئے۔ میڈیا ریگولیٹر کے معاملے میں ٹرائی نے کہاکہ حکومت کو میڈیا پر نظر رکھنے کی ذمہ داری قبول نہیں کرنی چاہئے بلکہ اس کے لئے کوئی علحدہ ریگولیٹری اتھاریٹی ہو جو ٹی وی اور پرنٹ میڈیا دونوں پر نظر رکھے۔

TOPPOPULARRECENT