میڈیکل ہب کا حیدرآباد شہر بیمار ہب میں تبدیل

ٹی آر ایس حکومت پر معمولی رقم کے لیے سستی شراب عام کرنے کا الزام ، ڈی کے ارونا
حیدرآباد ۔ 24 ۔ اگست : ( سیاست نیوز) : کانگریس کی رکن اسمبلی و سابق وزیر مسز ڈی کے ارونا نے میڈیکل ہب کا درجہ رکھنے والے حیدرآباد کو بیمار ہب میں تبدیل کردینے کا ٹی آر ایس حکومت پر الزام عائد کیا ۔ آج یہاں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مسز ڈی کے ارونا نے کہا کہ صرف 5 ہزار کروڑ روپئے کی آمدنی کے واسطے سستی شراب کو عام کیا جارہا ہے ۔ کانگریس کے 10 سالہ دور حکومت میں چیف منسٹرس کی دور اندیشی کی وجہ سے شہر حیدرآباد و اس کے اطراف و اکناف سرکاری و کارپوریٹ ہاسپٹلس کا جال بچھا دیا گیا ۔ راجیو آروگیہ شری اسکیم کے ذریعہ غریب عوام کا بھی کارپوریٹ ہاسپٹلس میں علاج کرانے کی سہولت فراہم کی گئی ۔ ٹی آرا یس حکومت سستی شراب کو عام کرتے ہوئے صحت مند شہر حیدرآباد کو بیمار شہر میں تبدیل کررہے ہیں ۔ جس کی کانگریس پارٹی سخت مذمت کرتی ہے ۔ چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے عوام کی صحت کو نظر انداز کر کے سرکاری خزانے کو بھرنے کے لیے نئی اکسائز پالیسی کا اعلان کیا ہے ۔ جس کی سارے تلنگانہ میں مخالفت ہورہی ہے ۔ جمہوریت میں عوام ہی بادشاہ ہوتے ہیں اور عوام کا فیصلہ قطعی ہوتا ہے ۔ تلنگانہ کے عوام نے صرف 5 سال کے لیے ٹی آر ایس کو اقتدار سونپا ہے ۔ عوامی فلاح و بہبود اور ترقی کے لیے کام کرنے کے بجائے چیف منسٹر مخالف عوام پالیسیوں پر عمل کررہے ہیں ۔ گڑمبا کو کنٹرول کرنے میں ناکام ہونے والی ٹی آر ایس حکومت سستی شراب کو عام کررہی ہے ۔ نلوں کے ذریعہ گھروں کو پانی سربراہ کرنے کا وعدہ کرنے والے چیف منسٹر سستی شراب کو گھروں تک پہونچاتے ہوئے سماجی بگاڑ کا موجب بن رہے ہیں ۔ سستی شراب عام ہوتے ہی خواتین پر مظالم کے واقعات میں مزید اضافہ ہوجائے گا ۔ بچوں کی کفالت ، تعلیم اور لڑکیوں کی شادی مسئلہ بن جائے گی ۔ حکومت کی نئی اکسائز پالیسی کے خلاف مختلف خواتین کی تنظیمیں احتجاج کررہی ہیں جس کی کانگریس پارٹی مکمل تائید کرے گی ۔۔

TOPPOPULARRECENT