Thursday , November 15 2018
Home / Top Stories / ’’میں ،مسلم خواتین کو حق دلا کر رہوں گا‘‘ : مودی

’’میں ،مسلم خواتین کو حق دلا کر رہوں گا‘‘ : مودی

ہندوستان کی ساری دنیا میں پذیرائی ، ہم مکھن پر نہیں پتھر پر لکیر کھینچنے والے ہیں

نئی دہلی۔ 15 اگست (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے تین طلاق کے بارے میں کہا کہ مَیں مسلم خواتین کو اُن کا حق دلا کر رہوں گا۔ ہم نے خواتین کے احترام میں کئی اقدامات کئے ہیں۔ فوج سے لے کر عام شعبوں میں خواتین کو بااختیار بنایا جارہا ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ تین طلاق کی لعنت نے ہمارے ملک کی مسلم خواتین کی زندگیاں برباد کردی ہیں۔ پارلیمنٹ میں قانون لاکر اس لعنت کو ختم کرنے کا بیڑہ اٹھایا ہے۔ انہوں نے کانگریس پر بالواسطہ تنقید کرتے ہوئے کہا کہ پارلیمنٹ میں تین طلاق قانون کی منظوری کی راہ میں بعض لوگ رکاوٹ بنے ہوئے ہیں۔ میں ملک کی متاثرہ ماؤں، بیٹی اور بہنوں کو یقین دلاتا ہوں کہ ان کے انصاف اور حقوق کیلئے ہر ممکن کوشش کرتا رہوں گا۔ لال قلعہ کی فصیل سے یوم آزادی تقریر کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ ہندوستان ساری دنیا میں اپنی شناخت کو مضبوط کررہا ہوں۔ ہندوستانی پاسپورٹ کی قدر میں اضافہ ہوگیا ہے۔ ہندوستان دنیا کے 6 معاشی طاقتوں کے درمیان موجود ہے۔ ’’ون رینک، ون پینشن‘‘ کا مطالبہ کئی دہوں سے زیرالتواء تھا، ہم نے اسے منظوری دی ہے۔ جب حوصلے بلند ہو تو ہر برائی ختم ہوجاتی ہے۔ ہمارے حوصلے اتنے بلند ہیں کہ ہم نے بے نامی املاک قانون منظور کیا ہے۔ عالمی سطح پر ہندوستان کی بات سنی جارہی ہے۔ میری حکومت کی خارجہ پالیسیاں کامیاب ہورہی ہیں۔ اندرون ملک صاف صفائی مہم ’’سوچھ بھارت‘‘ مشن کو چلاتے ہوئے ہم نے 3 لاکھ بچوں کی زندگیاں بچائی ہیں۔ عالمی صحت تنظیم (ڈبلیو ایچ او) نے بھی سوچھ بھارت مشن کی تعریف کی ہے۔ میری حکومت نے ہر مشکل کو آسان بنادیا ہے۔ ہم مکھن پر لکیر کھینچنے والے نہیں بلکہ پتھر پر لکیر کھینچنے والے ہیں۔ کل تک شمال مشرقی ریاستوں کا کوئی پرسان حال نہیں تھا، ان ریاستوں کو یہ احساس دلایا جاتا تھا کہ دہلی بہت دور ہے، لیکن ہم نے دہلی کو شمال مشرق کے دروازے تک لے جانے میں کامیابی حاصل کی ہے۔ کروڑوں لوگوں کو غریبی سے باہر نکالا، ملک کی بیٹیاں ہمارے شانہ بہ شانہ چل رہی ہیں، عصمت ریزی میں ملوث خاطیوں کو پھانسی دی جارہی ہے، خواتین کی عفت کی سلامتی کیلئے سخت سزا کا اطلاق لازمی ہے تاکہ دوسرا شخص اس گھناؤنی حرکت سے قبل ہزار بار سوچے۔

TOPPOPULARRECENT