Friday , January 19 2018
Home / سیاسیات / میں ابھی استعفیٰ کے موڈ میں نہیں ہوں:اکھلیش

میں ابھی استعفیٰ کے موڈ میں نہیں ہوں:اکھلیش

لکھنؤ۔/20مئی، ( سیاست ڈاٹ کام ) لوک سبھا انتخابات میں سماجو ادی پارٹی کی شکست فاش کے بعد وزیر اعلیٰ اتر پردیش اکھلیش یادو نے ایسے 36لیڈروں کو برطرف کردیا جو ریاستی وزراء کا درجہ رکھتے تھے لیکن خود اپنے استعفی کو خارج از امکان قرار دیا۔ پارٹی ذرائع نے بتایا کہ جن وزراء پربجلی گری ہے ان میں اقلیتی فرقہ سے تعلق رکھنے والے چھ وزراء بھی شام

لکھنؤ۔/20مئی، ( سیاست ڈاٹ کام ) لوک سبھا انتخابات میں سماجو ادی پارٹی کی شکست فاش کے بعد وزیر اعلیٰ اتر پردیش اکھلیش یادو نے ایسے 36لیڈروں کو برطرف کردیا جو ریاستی وزراء کا درجہ رکھتے تھے لیکن خود اپنے استعفی کو خارج از امکان قرار دیا۔ پارٹی ذرائع نے بتایا کہ جن وزراء پربجلی گری ہے ان میں اقلیتی فرقہ سے تعلق رکھنے والے چھ وزراء بھی شامل ہیں ۔

یہ بھی کہا جارہا ہے کہ اکھلیش کچھ دیگر کابینی اور ریاستی وزراء کو بھی برطرف کریں گے۔یاد رہے کہ حالیہ لوک سبھا انتخابات میں سماجوادی پارٹی کو صرف پانچ نشستوں پر کامیابی ملی۔ حالانکہ اکھلیش یادو کے استعفی کا بھی مطالبہ کیا جارہا ہے لیکن انہوں نے واضح کردیا کہ فی الحال ان کا استعفی دینے کا موڈ نہیں ہے اور سماجوادی پارٹی کی ناقص کارکردگی کی وجوہات پر نظرثانی کی جاچکی ہے۔ جب ان سے یہ پوچھا گیا کہ کیا وہ اپنے بہار کے ہم منصب نتیش کمار کے نقش قدم پر چلتے ہوئے وزارتِ اعلیٰ کے عہدہ سے مستعفی ہوجائیں گے؟

جس کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہر ریاست کے سیاسی حالات ایک دوسرے سے مختلف ہوتے ہیں لہذا ایک ریاست کاتقابل دوسری ریاست سے نہیں کرنا چاہیئے۔ یاد رہے کہ انتخابات کے اختتام کے بعد اکھلیش نے آج پہلے کابینی اجلاس کی صدارت کی تھی جہاں انہوں نے کہا کہ پارٹی کی ناقص کارکردگی کا بھی پارٹی سربراہ ملائم سنگھ یادو نے سخت نوٹ لیا ہے اور انہوں نے اس پر نظر ثانی بھی کی ہے۔ یہاں اس بات کا تذکرہ ضروری ہے کہ اقلیتی طبقہ سے تعلق رکھنے والے جن لیڈروں کو برطرف کیا گیا ہے ان میں انیس منصوری، محمد عباس، اقبال علی، حاجی اکرام اور قمر الدین شامل ہیں۔

TOPPOPULARRECENT