Friday , October 19 2018
Home / Top Stories / میں بی جے پی کی بی ٹیم نہیں ہوں :اجیت جوگی

میں بی جے پی کی بی ٹیم نہیں ہوں :اجیت جوگی

رمن سنگھ سے مقابلہ کا اعلان ‘ کانگریس ناکارہ ‘ چیف منسٹر چھتیس گڑھ کا بیان

نئی دہلی ۔ 22جولائی ( سیاست ڈاٹ کام ) کانگریس کو ناکارہ اور الگ تھلگ ہوجانے والی پارٹی قرار دیتے ہوئے چھتیس گڑھ کے پہلے چیف منسٹر اجیت جوگی نے آج ان خبروں کو مسترد کردیا کہ وہ بی جے پی کی بی ٹیم ہے اور کہاکہ وہ موجودہ رکن اسمبلی رمن سنگھ اور ان کی پارٹی سے ریاست میں آئندہ عام انتخابات کے دوران مقابلہ کریں گے ۔ انہوں نے کہاکہ اگر میں بی ٹیم ہوتا تو راج مند گاؤں سے جو پہلے چیف منسٹر کا انتخابی حلقہ ہے مقابلہ نہ کرتا ‘ اگر میں بی ٹیم ہوتا تو قتل کے بے بنیاد مقدمہ کا سامنا نہ کرتا ۔ انہوں نے کہا کہ میرے فرزند کے خلاف ڈکیتی کا جھوٹا مقدمہ نہ ہوتا ۔ میرے بیٹے کو قتل کی سازش کرنے کے الزامات کا سامنا نہ ہوتا ۔ اگر میں بی ٹیم ہوتا تو یہ تمام واقعات پیش نہ آتے ۔ وہ پی ٹی آئی کو انٹرویو دے رہے تھے ۔ اجیت جوگی نے کہا کہ انہیں عدلیہ پر یقین ہے کہ یہ تمام بے بنیاد الزامات ان کے خلاف اور ان کے فرزند کے خلاف واپس لے لئے گئے ۔ انہوں نے کہا کہ ایک مہا گٹھ بندھن ( جو بی جے پی مخالف ہے ) 2019ء کے عام انتخابات کیلئے ضروری ہے لیکن ریاست میں اسمبلی انتخابات کیلئے جو جاریہ سال کے اوآخر میںمقرر ہے اس کی ضرورت نہیں ہوگی ۔ آر ایس پی اور کانگریس کے درمیان مجوزہ اتحاد ریاست میں ان کی پارٹی کیلئے نقصاندہ ہوگا ۔ اس کے بارے میں ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے سرکاری عہدیدار سے سیاستداں بننے والے اجیت جوگی نے کہا کہ ایسا اتحاد ابھی قائم نہیں ہوا ہے اور ان کی پارٹی صورتحال کا تخمینہ کرے گی ‘ جب ایسی صورتحال ابھر آئے گی ۔ اس سوال پر کہ کیا آر ایس پی ۔ کانگریس اتحاد قائم ہوسکتا ہے یا نہیں ‘ انہوں نے کہا کہ آئندہ کہ لائحہ عمل کا فیصلہ صورتحال کے مطابق کیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ فائدے اور نقصانات دونوں ہوسکتے ہیں ‘ جب کبھی ایسا اتحاد قائم ہو تو وہ اس کا تخمینہ کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ فی الحال ہم انتخابات میں تمام نشستوں سے مقابلہ کرنے کا فیصلہ کرچکے ہیں ۔کانگریس اور بی جے پی دونوں کے فیصلے دہلی میں ہونے پر تنقید کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ چھتیس گڑھ کو آج ایسی قیادت کی ضرورت ہے جو ریاست پر مرکوز ہو۔انہوں نے کہا کہ کانگریس کی مخالفت اس حقیقت کا نتیجہ ہے کہ یہ پارٹی اب قومی پارٹی نہیں رہی اور ناکارہ ہوگئی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT