Thursday , October 18 2018
Home / Top Stories / ’میں سکندرآباد سے مقابلہ کرناچاہتا ہوں‘ : محمد اظہر الدین

’میں سکندرآباد سے مقابلہ کرناچاہتا ہوں‘ : محمد اظہر الدین

آبائی ریاست میں مقابلہ کیلئے عوام کا اصرا ر ۔ پارٹی کو احساسات سے واقف کرواچکاہوں ۔ سابق کرکٹ کپتان کا انٹرویو

نئی دہلی 15 جولائی ( سیاست ڈاٹ کام )گذشتہ دو لوک سبھا انتخابات میں اترپردیش اور راجستھان سے مقابلہ کرنے کے بعد کانگریس لیڈر و سابق ہندوستانی کرکٹ کپتان محمد اظہر الدین 2019 کے لوک سبھا انتخابات میں اپنی آبائی ریاست تلنگانہ کے حلقہ سکندرآباد سے مقابلہ کرنا چاہتے ہیں۔ اظہر الدین نے 2009 میں یو پی کے مراد آباد حلقہ سے کامیابی حاصل کی تھی تاہم انہیں 2014 میں راجستھان کے ٹونک ۔ سوائی مادھوپور حلقہ سے شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا ۔انہوں نے کہا کہ وہ کہاں سے مقابلہ کرینگے اس کا فیصلہ پارٹی ہائی کمان کی جانب سے کیا جائیگا تاہم انہوں نے سکندرآباد سے مقابلہ کی اپنی خواہش سے پارٹی کو واقف کروادیا ہے ۔ پی ٹی آئی کو ایک انٹرویو دیتے ہوئے اظہر الدین نے کہا کہ انہوں نے مراد آباد سے اور پھر ٹونک سے مقابلہ کیا تھا کیونکہ وہ صرف محفوظ نشست پر انحصار کرنا نہیں چاہتے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ سکندرآباد حلقہ سے مقابلہ کرنے میں دلچسپی رکھتے ہیں کیونکہ کئی لوگوں کا خیال ہے کہ انہیں اپنی آبائی ریاست سے مقابلہ کرنا چاہئے ۔ اظہر نے کہا کہ انہوں نے اپنے حلقہ میں کئی مقامات اور گاووں کا دورہ کیا ہے اور کسانوں سے اور دوسرے افراد سے بات چیت کی ہے اور سبھی نے اس حلقہ سے مقابلہ کرنے ان کا خیر مقدم کیا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ وہ اپنے احساسات سے پارٹی اور ریاستی امور کے انچارچ قائدین کو واقف کرواچکے ہیں ۔ آخر میں فیصلہ تو پارٹی کرتی ہے ۔ یہاں وہ کپتان نہیں ہیں۔ اگر وہ کپتان ہوتے تو وہ ابھی سے اپنا حلقہ منتخب کرلیتے ۔ سکندرآباد حلقہ سے اپنی کامیابی کے امکانات سے متعلق سوال پر اظہر الدین نے کہا کہ انہوں نے کامیابی اور ناکامی پر غور نہیں کیا ہے کیونکہ انہیں عوام کی خواہشات کے مطابق یہاں سے مقابلہ کی جہت ملی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ سکندرآباد کے عوام کی خدمات کرنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے حلقہ میں بہت محنت کی ہے لیکن وہ تشہیر میں یقین نہیں رکھتے ۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی میں انہیں جو محسوس ہوا ہے وہ یہی ہے کہ پارٹی قائدین بھی چاہتے ہیں کہ وہ سکندرآباد حلقہ سے مقابلہ کریں۔ کانگریس تلنگانہ یونٹ نے اظہر سے مسلسل خواہش کی تھی کہ وہ ریاست میں اسمبلی کیلئے یا لوک سبھا کیلئے مقابلہ کریں۔ اظہر الدین نے اس خیال سے اتفاق نہیں کیا کہ 2014 میں ٹونک سے مقابلہ کرنا غلط فیصلہ نہیں تھا ۔ انہوں نے کہا کہ اس نشست پر انہوں نے سخت مقابلہ کیا تھا اس لئے یہ کوئی غلط فیصلہ نہیں تھا ۔ انہوں نے کہا کہ کچھ لوگ محفوظ حلقوں پر اکتفا کرتے ہیں لیکن وہ ایسا نہیں کرتے ۔ انہوں نے کہا کہ چونکہ کانگریس ایک سکیولر پارٹی ہے اس لئے انہوں نے اس میں شمولیت کا فیصلہ کیا تھا اس کے علاوہ وہ راجیو گاندھی کی بھی بہت عزت کرتے تھے ۔

TOPPOPULARRECENT