Tuesday , December 18 2018

’’ م 4 مہینے کے بجائے 4 سال گذر گئے ‘‘

 

ٹی آر ایس مسلمانوں کو گمراہ کررہی ہے ، سداسیوپیٹ میں جگاریڈی کا خطاب

سداسیوپیٹ۔ 9 نومبر (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ریاستی حکومت نے نوجوانوں کو روزگار، کسانوں کی خوشحالی، طلبہ کو تمام سہولتیں فراہم کرنے کا اعلان کیا تھا لیکن اقتدار پر آنے کے بعد ان تمام چیزوں کو فراموش کردیا اور افراد خاندان کی ترقی کو ہی یقینی بنایا گیا۔ یہ بات سابقہ رکن اسمبلی جگاریڈی نے سداسیوپیٹ اسریٰ فنکشن ہال میں کانگریس میں شامل ہونے والے قائدین سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے مزید کہا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ برسراقتدار آتے ہی اندرون چار مہینے مسلمانوں کو تحفظات ریزرویشن دینے کا وعدہ کیا تھا مگر آج تقریباً چار سال ہوگئے ، ہنوز مسلمانوں کو ریزرویشن نہیں ملا اور وقف بورڈ اراضیوں پر جو ناجائز قبضے ہورہے ہیں، انہیں روکنے میں بھی ناکام ہورہی ہے۔ انہوں نے ریاستی حکومت سے پرزور مطالبہ کیا کہ مسلم اقلیت کو 12% تحفظات کیلئے پارلیمنٹ میں بِل پیش کرنے مرکزی حکومت پر دباؤ ڈالا جائے۔ ریاستی حکومت، مسلم اقلیتی طلبہ کو باقی 3 کروڑ 70 لاکھ روپئے پر مشتمل پوسٹ میٹرک اسکالرشپ کی رقم جاری کرے۔ ریاستی حکومت کی جانب سے اراضیات کے سروے میں وقف جائیدادوں کے تحفظ کیلئے ریوینیو اور وقف بورڈ کا مشترکہ سروے کرایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ اقلیتی مالیتی کارپوریشن سے مالی سال 2016-17ء کے تحت ریاست بھر میں کئی درخواستیں منظور ہونے کے باوجود اجرائی عمل میں نہیں آئی ہے۔ انہیں جلد از جلد مکمل کریں اور کہا کہ ڈی ایس سی میں اُردو اساتذہ کی تمام مخلوعہ جائیدادوں پر تقررات کئے جائیں اور اُردو میڈیم مدارس میں بنیادی سہولتیں فراہم کی جائیں۔ انہوں نے اپنے خطاب میں کہا کہ ٹی آر ایس حکومت مسلمانوں کے ساتھ جھوٹے وعدے کررہی ہے اور بھولے بھالے مسلمانوں کو گمراہ کررہی ہے۔ مسلمانوں کے ساتھ انصاف کرنے والی جماعت تو کانگریس ہے۔ انہوں نے مجلس پارٹی کو نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ مجلس مسلم ووٹ کا غلط استعمال کررہی ہے۔ اسمبلی میں اکبرالدین اویسی کی تقریر سننے کے بعد مسلمان سوچنے پر مجبور ہوگئے ہیں کہ وہ مسلمانوں کو کیا انصاف دلائیں گے۔ اس موقع پر مجلس اتحادالمسلمین قائد محمد حسین اور ٹی آر ایس پارٹی قائد محمد علیم نے اپنے ساتھیوں کے ساتھ کانگریس میں شمولیت اختیار کرلی۔ ان کے ہمراہ محمد ذاکر، محمد افضل، محمد شکیل، محمد شعیب، صفیان، محمد رضوان اور مجلس سے سمیر، محمد عامر نے بھی کانگریس میں شمولیت اختیار کرلی۔ اس موقع پر کانگریس اقلیتی سیل ضلع صدر شیخ صابر رکن بلدیہ عبدالواجد، سابق رکن بلدیہ محمد خلیل اقلیتی سیل صدر لیئق رحمن، کانگریس قائدین، محمد قدیر، پون کمار، رامیش، راجو، جہاز، حاجی، خلیل کے علاوہ مسلمانوں کی کافی تعداد موجود تھی۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT