Tuesday , September 25 2018
Home / شہر کی خبریں / م16 مئی کو سرکاری ملازمین اور ٹیچرس نمائندوں کا اجلاس

م16 مئی کو سرکاری ملازمین اور ٹیچرس نمائندوں کا اجلاس

کابینی سب کمیٹی کی رپورٹ حکومت کو پیش ، مہیندر ریڈی کو آر ٹی سی ملازمین سے بات چیت کرنے کا مشورہ
حیدرآباد ۔ 11 ۔ مئی : ( سیاست نیوز ) : کابینی سب کمیٹی نے آج اپنی رپورٹ چیف منسٹر کو پیش کردی ۔ کے سی آر نے کابینی سب کمیٹی میں ریاستی وزیر ٹرانسپورٹ مہیندر ریڈی کو شامل کرتے ہوئے آر ٹی سی ملازمین سے بھی تبادلہ خیال کرنے کا مشورہ دیا ۔ 16 مئی کو چیف منسٹر تلنگانہ سرکاری ایمپلائز ٹیچرس کے نمائندوں اور آر ٹی سی تنظیموں کے نمائندوں کا اجلاس طلب کرتے ہوئے اسی دن انہیں راحت فراہم کرنے کا اعلان کریں گے ۔ سرکاری ایمپلائز اور ٹیچرس کے مسائل کا جائزہ لینے کے لیے چیف منسٹر کے سی آر نے ریاستی وزیر فینانس ایٹالہ راجندر کی قیادت میں ایک کابینی سب کمیٹی تشکیل دیتے ہوئے ریاستی وزیر بلدی نظم و نسق کے ٹی آر اور ریاستی وزیر برقی جگدیش ریڈی کو بحیثیت ارکان کمیٹی میں شامل کیا تھا ۔ کابینی سب کمیٹی نے مسلسل دو دن تک ایمپلائز اور ٹیچرس نمائندوں سے تبادلہ خیال کرنے کے بعد نظم و نسق اور فینانس کا احاطہ کرتے ہوئے عہدیداروں کو رپورٹ تیار کرنے کی ہدایت دی تھی اور یہ فیصلہ کیا تھا کہ 11 مئی کو رپورٹ چیف منسٹر تلنگانہ کو پیش کی جائے گی اور 14 مئی کو چیف منسٹر کے سی آر ایمپلائز اور ٹیچرس کے نمائندوں سے جائزہ اجلاس طلب کریں گے ۔ مقررہ پروگرام کے تحت کابینی سب کمیٹی کے ارکان ایٹالہ راجندر ، جگدیش ریڈی ، چیف سکریٹری ڈاکٹر ایس کے جوشی کے علاوہ دوسرے عہدیداروں نے آج پرگتی بھون میں چیف منسٹر سے ملاقات کرتے ہوئے اپنی رپورٹ پیش کردی ۔ تاہم آج ہی آر ٹی سی کے 7 تنظیموں نے اپنے 42 مطالبات پر مشتمل ہڑتال کی نوٹس منیجنگ ڈائرکٹر آر ٹی سی کے حوالے کرتے ہوئے 24 مئی سے قبل مطالبات قبول نہ کرنے کی صورت میں کسی بھی وقت ہڑتال شروع کردینے کی دھمکی دی ہے ۔ اس کی اطلاع ملنے پر چیف منسٹر نے کابینی سب کمیٹی میں ریاستی وزیر ٹرانسپورٹ مہیندر ریڈی کو شامل کرتے ہوئے 14 مئی کو ایمپلائز اور ٹیچرس تنظیموں کے ساتھ ہونے والے اجلاس کو 16 مئی تک ملتوی کردیا جب کہ کابینی سب کمیٹی کے ارکان کو آر ٹی سی تنظیموں کے نمائندوں سے مشاورت کرنے کی ہدایت دی ۔ 16 مئی کو ایمپلائز ، ٹیچرس اور آر ٹی سی ملازمین کے تنظیموں کے ساتھ مشترکہ اجلاس طلب کرتے ہوئے اسی دن تینوں شعبوں کے ملازمین کے لیے راحت پیاکیج کا اعلان کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ پی آر سی رپورٹ کی وصولی تک کافی وقت لگ جاتا ہے ۔ سابق روایت کو ختم کرتے ہوئے جلد از جلد رپورٹ کی وصولی کے لیے خصوصی حکمت عملی تیار کرنے کی چیف منسٹر نے عہدیداروں کو ہدایت دی ۔۔

TOPPOPULARRECENT