Wednesday , November 21 2018
Home / Top Stories / نئی رافیل معاملت نے پائلٹوں کی جان جوکھم میں ڈال دی

نئی رافیل معاملت نے پائلٹوں کی جان جوکھم میں ڈال دی

Morena: Congress President Rahul Gandhi addresses Ekta Parishad's 'Janandolan', in Morena, Saturday, Oct 6, 2018. (PTI Photo) (PTI10_6_2018_000097B)

نئی دہلی ، 18 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) صدر کانگریس راہول گاندھی نے آج الزام عائد کیا کہ ہندوستانی لڑاکا طیاروں کے پائلٹوں کی زندگیاں جوکھم میں ہیں کیونکہ وہ ’’قدیم‘‘ جاگوار طیارے اُڑا رہے ہیں اور این ڈی اے حکومت کی جانب سے مکرر مذاکرات کے بعد طے شدہ رافیل معاملت کے بعد فرانس سے نئی ٹکنالوجی ملک میں آنے والی نہیں ہے۔ رافیل معاملت پر مودی حکومت کے خلاف اپنے لفظی حملوں کو جاری رکھتے ہوئے راہول نے ایک
فیس بک پوسٹ میں دعویٰ کیا کہ این ڈی اے نے یو پی اے کی طے کردہ معاملت پر دوبارہ مذاکرات کئے تاکہ دوست سرمایہ داروں کو فائدہ پہنچایا جاسکے اور اس طرح ہندوستان کے وقار کو عالمی سطح پر گھٹادیا ہے۔ ہندوستان اب ٹکنالوجی کی منتقلی نہیں کرسکتا ہے جو کہ یو پی اے حکمرانی میں طے کی گئی تھی اور یہ شرم کی بات ہے کہ ہندوستانی پائلٹوں کو پرانے جاگوار طیارے اُڑاتے ہوئے اپنی جانوں کو جوکھم میں ڈالنا پڑے گا کیونکہ نئی ٹکنالوجی ملک میں نہیں آئی ہے۔ انھوں نے ایک میڈیا رپورٹ کے حوالے سے الزام عائد کیا کہ ٹکنالوجی کی منتقلی جو انڈین ایئر فورس کی ہیئت بدل سکتی تھی، اس کے ساتھ ساتھ 126 رافیل طیارے حاصل کرنے کی بجائے این ڈی اے حکومت نے اس معاملت پر مکرر مذاکرات کئے اور فرانس میں تیار کئے گئے صرف 36 طیارے حاصل ہوں گے۔ 2014ء سے معاملتوں کو قطعیت دینے کی بجائے جن کیلئے یو پی اے حکومت نے مذاکرات کئے تھے، موجودہ حکومت نے دوست سرمایہ داروں کو فائدہ پہنچانے کیلئے وہ سب معاملتوں پر مکرر مذاکرات پر توجہ مرکوز کر رکھی ہے۔ مثال کے طور پر یو پی اے حکومت کے مذاکرات میں ایچ اے ایل کو ٹکنالوجی کی منتقلی اور 126 طیاروں کا حصول شامل تھا۔ اسے اب گھٹا کر 36 طیاروں تک لایا گیا جو تمام فرانس میں بنائے جائیں گ

TOPPOPULARRECENT