Wednesday , April 25 2018
Home / شہر کی خبریں / نئی نسل کو قرآنی تعلیمات اور اسوہ حسنہ پر عمل کرنے کی تلقین

نئی نسل کو قرآنی تعلیمات اور اسوہ حسنہ پر عمل کرنے کی تلقین

جلسہ سیرت النبیؐ ، محمد عثمان شہید اور دیگر کا خطاب
حیدرآباد ۔ 18 ۔ جنوری : ( پریس نوٹ ) : مسلمانان ہند آج جس زعفرانی دہشت گردی کا شکار ہیں اور اپنے اور اپنی نسل کے مستقبل سے پریشان ہیں ۔ اس کا واحد علاج تعلیمات قرآن اور اسوہ حسنہ رسول اکرمؐ پر نیک نیتی اور سچے دل سے عمل کرنے سے ممکن ہے ۔ صرف اور صرف اللہ ہی ہماری جان و مال کی حفاظت کرنے والا ہے بشرطیکہ ہم خود کو ’ مسلمان ‘ ثابت کریں ۔ آج مسلمان اسلام سے دور ہوتے جارہے ہیں ۔ نتیجتاً اللہ بھی اُن سے دور ہوگیا ہے ۔ اور مسلمان قعر مذلت میں گرچکا ہے ۔ آج کا مسلمان بڑی بے حیائی سے جھوٹ بول رہا ہے ۔ شراب پی رہا ہے ۔ جوا کھیل رہا ہے ۔ دھوکا دے رہا ہے ۔ ایکدوسرے کے گلے کاٹ رہا ہے ۔ مسلک کی بنیاد پر دشمن جان بنے ہوئے ہیں ۔ ان خیالات کا اظہار جناب محمد عثمان شہید ایڈوکیٹ صدر آل انڈیا مسلم فرنٹ نے جلسہ سیرت النبیؐ منعقدہ اردو گھر مغل پورہ میں کیا ۔ جلسے کا آغاز جناب قاری سید عبدالحمید کی قرات کلام پاک سے ہوا ۔ جناب یوسف روش ، ڈاکٹر سلیم عابدی ، جناب جہانگیر قیاس نے نعت شریف پیش کی ۔ محترم شان حیدر شیعہ عالم دین نے کہا کہ حضور اکرم ؐ نے اپنے کردار سے ایک عالم کو اپنا گرویدہ بنالیا ۔ مسلمان دہشت گرد نہیں ہوسکتا کیوں کہ اسلام دہشت گردی نہیں سکھاتا ۔ عماد الدین انصاری نے مسلمانوں سے اپیل کی کہ وہ سرکار دو عالم ؐ کے بتائے ہوئے راستے پر عمل کر کے دین و دنیا میں سرخرو ہوں ۔ مفتی محمد رضی الدین مسعود نے اپنی تقریر میں قرآنی آیات کی تشریح کرتے ہوئے کہا کہ قرآن راہ ہدایت ہے قیامت تک ۔ قرآن ہمارا دستور حیات ہے ۔ اس کی ہر آیت ہمارے لیے مشعل راہ ہے ۔ جس نے قرآنی ہدایات پر عمل کیا وہ کامیاب ہوگیا ۔ عثمان الہاجری نے کہا کہ وقف کی جائیدادوں پر خود کو قوم کا رہبر بتاکر ناجائز قبضہ کرنے والے اللہ کو جواب دہ ہیں اور اللہ ان سے سخت باز پُرس کرے گا ۔ جناب غلام محمد جنرل سکریٹری مسلم فرنٹ کے شکریہ پر یہ متاثر کن جلسہ اختتام پر پہنچا ۔۔

TOPPOPULARRECENT