Saturday , June 23 2018
Home / شہر کی خبریں / نئے وکلاء کو جلد پیسہ حاصل کرنے مقصد نہ بنانے کا مشورہ

نئے وکلاء کو جلد پیسہ حاصل کرنے مقصد نہ بنانے کا مشورہ

پی جی کالج آف لا عثمانیہ یونیورسٹی کے کانوکیشن سے جسٹس جی چندریا کا خطاب

پی جی کالج آف لا عثمانیہ یونیورسٹی کے کانوکیشن سے جسٹس جی چندریا کا خطاب
حیدرآباد ۔ 27 ۔ دسمبر : ( سیاست نیوز ) : جسٹس جی چندریا ، جج ہائی کورٹ آف جوڈیکیچر حیدرآباد نے آج پی جی کالج آف لا عثمانیہ یونیورسٹی ، بشیر باغ سے قانون کی تعلیم حاصل کرنے کے بعد فارغ التحصیل طلبہ پر زور دیا کہ وہ جلدی سے پیسہ حاصل کرنے کی فکر نہ کریں بلکہ ان کے پاس آنے والے کلائنٹس کو صحیح مشورہ دیں اور انہیں بتائیں کہ قانون کیا ہے ۔ آج یہاں منعقدہ دوسرے منی کانوکیشن سے بحیثیت مہمان خصوصی مخاطب کرتے ہوئے جسٹس جی چندریا نے کہا کہ نئے وکلاء کو اس بات کو سمجھنا چاہئے کہ کیا چیز عوام کے مفاد میں ہے ۔ یہ وکلاء اب ایسے مقام پر آگئے ہیں کہ انہیں نہ صرف خود ان کے مسائل بلکہ سماج کے مسائل کو بھی حل کرنا ہے ۔ پروفیسر ای سریش کمار ، رجسٹرار عثمانیہ یونیورسٹی نے اس تقریب سے مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اسکل اور نالج دونوں کا رکھنا بہت اہم ہے ۔ انہوں نے پوسٹ گریجویٹ ڈگری حاصل کرنے والے طلبہ کو مبارکباد دی اور کہا کہ عثمانیہ یونیورسٹی کی ڈگری خصوصی اہمیت کی حامل ہوتی ہے ۔ اس کانوکیشن سے پروفیسر بالا کشٹیا ریڈی رجسٹرار نلسار لا یونیورسٹی ، پروفیسر وشنو پریا صدر شعبہ قانون ، پروفیسر بکشمیا ، کنٹرولر امتحانات عثمانیہ یونیورسٹی نے بھی مخاطب کیا ۔ اس موقع پر محبوب نگر کے حلقہ اسمبلی اچم پیٹ کی نمائندگی کرنے والے ٹی آر ایس کے رکن اسمبلی بالا راجو کو بھی قانون کی ڈگری عطا کی گئی ۔۔

TOPPOPULARRECENT