نائجیریا: بوکو حرام کیخلاف جاری مہم، 8000 افراد ہلاک

نائجیریا 4 جون (سیاست ڈاٹ کام) 2009 ء سے اب تک نائجیریا کی فوج کی جانب سے کئے گئے دھاوؤں کے دوران 1200 سے زائد افراد کو پھانسیاں دی گئیں؛ جب کہ کم از کم 7000 مزید زیر حراست افراد اذیت، پیاس، بھوک یا پھر جیلوں میں شدید بھیڑ کے باعث ہلاک ہوئے۔انسانی حقوق سے متعلق ایک گروپ کا کہنا ہے کہ بوکو حرام کے باغی گروہ کا قلع قمع کرنے کی سرکاری کارروائی

نائجیریا 4 جون (سیاست ڈاٹ کام) 2009 ء سے اب تک نائجیریا کی فوج کی جانب سے کئے گئے دھاوؤں کے دوران 1200 سے زائد افراد کو پھانسیاں دی گئیں؛ جب کہ کم از کم 7000 مزید زیر حراست افراد اذیت، پیاس، بھوک یا پھر جیلوں میں شدید بھیڑ کے باعث ہلاک ہوئے۔انسانی حقوق سے متعلق ایک گروپ کا کہنا ہے کہ بوکو حرام کے باغی گروہ کا قلع قمع کرنے کی سرکاری کارروائیوں کے نتیجے میں، نائجیریا کے 8000 سے زائد افراد ہلاک ہوئے ہیں۔’ایمنسٹی انٹرنیشنل‘ نے بتایا ہے کہ اْس کے تحقیق کار اِس نتیجے پر پہنچے ہیں کہ سنہ 2009 سے اب تک نائجیریا کی فوج کی جانب سے کئے گئے دھاوؤںکے دوران 1200 سے زائد افراد کو پھانسیاں دی گئیں۔اْس کا کہنا ہے کہ کم از کم 7000مزید زیر حراست افراد اذیت، پیاس، بھوک یا پھر جیلوں میں شدید بھیڑ کے باعث ہلاک ہوئے۔حقوق انسانی گروپ نے بتایا کہ اعلیٰ فوجی عہدیداروں کو حراستوں اور اموات کی شرح میں اضافہ کا پورا علم تھا۔

TOPPOPULARRECENT