Wednesday , December 19 2018

نائجیریا : لڑکیوں کا اغواء، مذہبی تعلیمات کے منافی

قاہرہ ۔ 8 مئی (سیاست ڈاٹ کام) نائجیریا میں بوکوحرام کی جانب سے اسکول کی طالبات کو اغواء کرنے کے واقعہ کی عالمی سطح پر مذمت کا سلسلہ جاری ہے۔ یہ واقعہ تین ہفتے قبل پیش آیا تھا اور بوکوحرام کے سربراہ ابوبکر شیکاؤ نے اس کی ذمہ داری قبول کی ہے۔ مختلف ممالک سے تعلق رکھنے والے مسلمان رہنماؤں نے بوکوحرام کی قیادت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ یہ

قاہرہ ۔ 8 مئی (سیاست ڈاٹ کام) نائجیریا میں بوکوحرام کی جانب سے اسکول کی طالبات کو اغواء کرنے کے واقعہ کی عالمی سطح پر مذمت کا سلسلہ جاری ہے۔ یہ واقعہ تین ہفتے قبل پیش آیا تھا اور بوکوحرام کے سربراہ ابوبکر شیکاؤ نے اس کی ذمہ داری قبول کی ہے۔ مختلف ممالک سے تعلق رکھنے والے مسلمان رہنماؤں نے بوکوحرام کی قیادت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ یہ افراد مذہب کا غلط استعمال کرتے ہوئے لڑکیوں کو فروخت کرنے اور انہیں غلام بنانے کے جواز کے طور پر پیش کررہے ہیں۔

اس کے علاوہ متعدد رہنماؤں نے اس واقعہ پر ابوجہ حکومت کے سست ردعمل پر بھی برہمی کا اظہار کیا ہے۔ مصر میں مذہبی امور کے وزیر محمد مختار نے کہا کہ بوکوحرام کے اقدامات کلی طور پر دہشت گردی ہیں۔ ان کا اور خاص طور پر لڑکیوں کے اغواء کے اس واقعہ کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ جامعہ الاظہر کے شیخ احمد الطیب کے بقول لڑکیوں کو اغواء کرنا مذہبی تعلیمات اور اصولوں کے منافی ہے۔ دنیا میں آبادی کے لحاظ سے سب سے بڑے مسلم ملک انڈونیشیاء میں بھی اس واقعہ پر شدید غم و غصہ پایا جاتا ہے۔ جکارتہ سے شائع ہونے والے اخبار جکارتہ پوسٹ نے اپنے ادارے میں لکھا ہے ’’بوکوحرام کی جانب سے مغویہ لڑکیوں کو غلام بنانے اور فروخت کرنے کی بات کرنا مذہبی اقدار کی خلاف ورزی ہے‘‘۔

اس کالم میں پاکستان میں طالبان کا نشانہ بننے والی ملالہ یوسف زئی کا بھی ذکر کیا گیا۔ ادارے کے مطابق ’’ملالہ کا پیغام ان تمام افراد تک پہنچانے کی ضرورت ہے، جو اپنی طاقت صرف اس لئے استعمال کرتے ہیں کہ بچوں کو تعلیم سے روکا جائے یہ انتہائی افسوسناک امر ہیکہ مذہب کے افراد کو دہشت زدہ کرنے کیلئے استعمال کیا جارہا ہے‘‘۔ اخبار نے نائجیریا کے صدر گڈلک جوناتھن کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ اخبار کے مطابق سخت عالمی ردعمل اور ملک میں مظاہروں کے بعد ہی گڈلک جوناتھن نے لڑکیوں کو ڈھونڈنے کے حوالے سے ہر ممکن کارروائی کرنے کا اعلان کیا تھا‘‘۔ نائجیریا کی صورتحال کو دیکھتے ہوئے برطانوی اور فرانسیسی حکومتوں نے اعلان کیا ہیکہ مغویہ لڑکیوں کی بازیابی کے سلسلہ میں ان کے ماہرین بھی تعاون کریں گے۔

نائجیریا : مغویہ طالبات میری بہنوں کی طرح ہیں : ملالہ یوسف زئی
لندن ۔ 8 مئی (سیاست ڈاٹ کام) پاکستانی طالبہ ملالہ یوسف زئی نے نائجیریا میں مسلم شدت پسندوں کے ہاتھوں اغواء ہونے والی 200 سے زائد لڑکیوں کے اغواء کے واقعہ پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہیکہ وہ ان کی بہنوں کی طرح ہیں۔ امریکی نشریاتی ادارے سی این این سے گفتگو میں ملالہ نے کہا ہیکہ لڑکیوں کے اغواء میں ملوث شدت پسند گروہ بوکوحرام اسلام کو نہیں سمجھتا اور اس کے ارکان نے قرآن نہیں پڑھا۔ ملالہ کا کہنا تھا ’’دراصل وہ اسلام کے نام کا ناجائز فائدہ اٹھارہے ہیں کیونکہ وہ یہ بھول گئے ہیں کہ اسلام کا لفظی مطلب ’امن‘ ہے‘‘۔ نائجیریا میں ان لڑکیوں کے اغواء کا واقعہ تقریباً ایک ماہ قبل پیش آیا تھا۔ اس کی ذمہ داری بوکوحرام نے قبول کرلی ہے۔

TOPPOPULARRECENT