نائجیریا کی مغویہ لڑکیوں کو بچائیں گے ، اوباما کا عہد

کانو (نائجیریا) ؍ واشنگٹن ، 7 مئی (سیاست ڈاٹ کام)نائجیریا میں بوکوحرام کے عسکریت پسندوں کی جانب سے لگ بھگ 300 لڑکیوں کے اغوا کو ’’خوفناک‘‘ اور ’’دل شکن‘‘ قرار دیتے ہوئے امریکی صدر براک اوباما نے کہا ہے کہ امریکہ وہ ’’سب کچھ‘‘ کر گزرے گا جو مغویہ بچوں کو ڈھونڈنے میں مدد کیلئے کیا جاسکتا ہے۔ ’’ظاہر ہے جو کچھ ہورہا ہے خوفناک ہے، او

کانو (نائجیریا) ؍ واشنگٹن ، 7 مئی (سیاست ڈاٹ کام)نائجیریا میں بوکوحرام کے عسکریت پسندوں کی جانب سے لگ بھگ 300 لڑکیوں کے اغوا کو ’’خوفناک‘‘ اور ’’دل شکن‘‘ قرار دیتے ہوئے امریکی صدر براک اوباما نے کہا ہے کہ امریکہ وہ ’’سب کچھ‘‘ کر گزرے گا جو مغویہ بچوں کو ڈھونڈنے میں مدد کیلئے کیا جاسکتا ہے۔ ’’ظاہر ہے جو کچھ ہورہا ہے خوفناک ہے، اور دو لڑکیوں کے باپ کی حیثیت سے میرے لئے تصور کرنا مشکل ہے کہ متعلقہ والدین کس حال میں ہوں گے،

‘‘ اوباما نے لڑکیوں کے تین ہفتے قبل بوکوحرام گروپ کی جانب سے اغوا کے تعلق سے یہ بات کہی، جبکہ اس گروپ نے مغویہ بچوں کو فروخت کردینے کی دھمکی دی ہے۔ اوباما کے حوالے سے این بی سی نیوز نے کہا، ’’مختصر مدتی طور پر ہمارا مقصد بلاشبہ بین الاقوامی برادری اور نائجیریائی حکومت کی مجموعی طور پر مدد کرنا ہے تاکہ وہ سب کچھ کیا جائے جو ہم ان کم عمر لڑکیوں کی بازیابی کیلئے کرسکتے ہیں۔ اوباما نے کہا کہ نائجیریا کو بھیجی گئی ٹیم ملٹری، لا انفورسمنٹ اور دیگر ایجنسیوں پر مشتمل ہے۔ اوباما نے تصدیق بھی کی ہے کہ نائجیریا نے لڑکیوں کی بازیابی کیلئے امریکی مدد کی پیش کش قبول کر لی ہے۔

’بوکو حرام‘ نے مزید گیارہ لڑکیاں اغوا کرلئے
دریں اثناء شدت پسند گروہ بوکو حرام کے مشتبہ حملہ آوروں نے مزید آٹھ لڑکیاں اغوا کر لی ہیں۔ یہ واقعہ شمال مشرقی نائجیریا میں جسے اسلام پسندوں کا گڑھ سمجھا جاتا ہے، اتوار کو دیر گئے پیش آیا۔ مغویہ لڑکیوں کی عمریں بارہ تا پندرہ برس ہیں۔ بورنو ریاست کے گوزا علاقے کے عہدہ دار حمزہ تادا نے بتایا کہ حملہ آوروں نے پڑوسی گاؤں سے بھی تین لڑکیوں کو اغوا کرلیا، جس سے مزید مغویہ لڑکیوں کی تعداد 11 ہوگئی ہے۔ بوکو حرام کے سربراہ ابوبکر شیکاؤ نے اپریل میں ایک بورڈنگ اسکول سے 200 سے زائد طالبات کو اغوا کرنے کی ذمہ داری قبول کی تھی۔

TOPPOPULARRECENT