Tuesday , January 23 2018
Home / شہر کی خبریں / نائیڈو نے سیما آندھرا میں تشکیل حکومت کا دعوی پیش کیا

نائیڈو نے سیما آندھرا میں تشکیل حکومت کا دعوی پیش کیا

صدر تلگو دیشم کی گورنر ای ایس ایل نرسمہن سے ملاقات۔ تلنگانہ کی ترقی سے دلچسپی کا ادعا

صدر تلگو دیشم کی گورنر ای ایس ایل نرسمہن سے ملاقات۔ تلنگانہ کی ترقی سے دلچسپی کا ادعا

حیدرآباد۔19مئی ( سیاست نیوز) صدر تلگودیشم پارٹی مسٹر چندرا بابو نائیڈو نے پارٹی کے منتخبہ ارکان اسمبلی کے ہمراہ راج بھون میں گورنر مسٹر ای ایس ایل نرسمہن سے ملاقات کرکے منقسم آندھراپردیش میں تشکیل حکومت کا دعویٰ پیش کردیا۔ نائیڈو نے آج پارٹی کے مختلف قائدین کے ہمراہ گورنر سے ملاقات کی ۔ مسٹر نرسمہن نے انہیں انتخابات میں کامیابی پر مبارکباد پیش کی ۔ تلگودیشم نے منقسم آندھراپردیش میں 175 اسمبلی نشستوں کے منجملہ 103 نشستوں پر کامیابی حاصل کرکے سیما آندھرا میں اقتدار کے حصول کی راہ ہموار کرلی ہے ۔ ملاقات کے دوران صدر تلگودیشم نے گورنر کو تائیدی ارکان اسمبلی کے دستخط پر مشتمل مکتوب حوالے کیا ۔ ذرائع کے بموجب مسٹر نرسمہن نے واضح کیا کہ ریاست کی تقسیم کی معلنہ تاریخ 2جون کے بعد ہی تشکیل حکومت کا عمل یقینی ہوجائے گا ۔ راج بھون کے باہر مسٹر نائیڈو نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ریاست کی مجموعی ترقی صرف تلگودیشم دور حکومت میں ہوئی ۔ انہوں نے تلنگانہ میں ٹی آر ایس حکومت کی بہتر کارکردگی پر مکمل تعاون کی پیشکش کرتے ہوئے کہا کہ جب تک بہترین حکمرانی ہوگی اس وقت تک تلگودیشم کا تلنگانہ حکومت کو تعاون حاصل رہے گا ۔ مسٹر نائیڈو نے بتایا کہ سیما آندھرا عوام کو حیدرآباد یا نواحی علاقوں میں خوفزدہ کرنے کی کوششوں کو برداشت نہیں کیا جائیگا ۔

انہوں نے دعویٰ کیا کہ تلگودیشم نے ملک کے مفادات کی خاطر بی جے پی سے مفاہمت کی ہے ۔ نائیڈو نے سابق یو پی اے حکومت پر الزام عائد کیا کہ اس نے ریاست کی تقسیم کے وقت قوانین کو بالائے طاق رکھ دیا تھا ۔ انہوں نے فوری کہا کہ جو ہوچکا ہے اس پر تبصرے کرنا فضول ہے لیکن ان کا مقصد دونوں علاقوں کو مساوی ترقی کو یقینی بنانا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ تلنگانہ میں سال 2019ء میں تلگودیشم اقتدار حاصل کریگی ۔ انہوں نے ریاست کو درپیش مسائل بالخصوص برقی ‘ آبرسانی و بلدی مسائل پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا ۔ مسٹر نائیڈو نے بتایا کہ آندھراپردیش کی مجموعی ترقی ان کا مقصد ہے اور شہر کو ترقی یافتہ بنانے تیز رفتار خدمات کا آغاز ضروری ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ تلگودیشم دونوں ریاستوں میں عوامی مسائل کے حل کیلئے سرگرم رہے گی ۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ حیدرآباد کی ترقی ان کے دور حکومت کی مرہون منت ہے اور انہوں نے حیدرآباد میں سرمایہ کاروں کو سرمایہ کاری کیلئے راضی کروایا ہے جس کے نتیجہ میں کئی بیرونی سرمایہ کاروں نے اس ریاست میں بڑے پیمانے پر سرمایہ کاری کی لیکن گدشتہ 10برسوں کے دوران ریاست میں جو تباہی مچائی ہے اس سے ریاست بحران کا شکار ہے ۔ مسٹر نائیڈو کے ہمراہ اس موقع پر مسٹر آر کرشنیا ‘ جناب محمد سلیم کے علاوہ دیگر قائدین موجود تھے ۔ نائیڈو نے صدرنشین ٹی جے اے سی کے بیانات کو قابل مذمت قرار دیتے ہوئے استفسار کیا کہ آیا وہ کس حیثیت سے بیان جاری کرتے ہوئے عوام میں خوف و ہراس کا ماحول پیدا کررہے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT