Saturday , January 20 2018
Home / اضلاع کی خبریں / ناندیڑ میں 14سالہ طالب علم ،2 اساتذہ کے ظلم کا شکار

ناندیڑ میں 14سالہ طالب علم ،2 اساتذہ کے ظلم کا شکار

ذہنی اور جسمانی اذیتیں دینے کی شکایت، چائلڈ ایکٹ کے تحت کیس درج

ذہنی اور جسمانی اذیتیں دینے کی شکایت، چائلڈ ایکٹ کے تحت کیس درج

ناندیڑ۔3اپریل(سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)ناندیڑشہر کے تروڑہ ناکہ راجیش نگر علاقہ میں واقع شری سمرتھ نامی ہاسٹیل میں ایک 14سالہ ’’نرنجن ‘‘نامی طالب علم جو کہ 8ویں جماعت میں پڑھتا ہے۔ اس 14سالہ بچے پر دو اساتذہ نے لاٹھیوں اور بینج کی لکڑی سے اس بچے کی پیٹھ پر شدید زدو کوب کرنے کی واردات منظر عام پر اُجاگر ہوئی۔ یہ واردات 31مارچ کے روز دیر شب میں پیش آئی۔اس واردات کی شکایت موصول ہونے پر آج دو اساتذہ کے خلاف میں شہر کے بھاگیہ نگر پولیس اسٹیشن میں معاملہ درج کرلیا گیا۔ پولیس پریس نوٹ کے بموجب ایوت محل ضلع کے عمر کھیڑ تحصیل کے اونچ واڈ علاقہ میں رہاش پذیر 14سالہ نرنجن نامی طالب علم نے ناندیڑ شہر کے تروڑہ ناکہ علاقہ میں واقع شری سمرتھ ہاسٹیل میں داخلہ لیا تھا۔ اس 14سالہ طالب علم کے سرپرست حضرات نے اس بچے ّ کو شہر کے مانیک نگر علاقہ میں واقع شری شیواجی ہائی اسکول میں داخلہ دلوایاتھا۔ 8ویں جماعت کے طالب علم نرنجن کو ہاسٹیل کے ذمہ دار ٹیچر ساکھرے اور جوشی پچھلے کئی دنوں سے کسی نہ کسی بات کو لے کر اس طالب علم کو ذہنی اور جسمانی اذیتیںدے رہے تھے۔پانچ دن قبل ہی دو اساتذ ہ نے اس طالب علم نرنجن کو دھمکی دی تھی کہ تم ہم سے بچ کر رہنا ورنہ تمھاری پٹائی کردی جائے گی۔31مارچ کے دیر شب میں 14سالہ طالب علم نرنجن اور اُس کا دوست ہاسٹیل میں پڑھائی کرنے میں مصروف تھے۔ اسی دوران ساکھرے وہاںپہنچ گیا اور پڑھائی کررہے نرنجن کو نازیبا کلمات ادا ء کرتے ہوئے بینج کی لکٹر ی اور لاٹھی سے پیٹھ پر شدید زدو کوب کیا۔ جس کے سبب اس 14سالہ بچیّ کے پیٹھے پر کئی زخموں کے نشان صاف طور پر دیکھے جاسکتے ہیں۔ پٹائی کی مار کو برداشت نہ کرنے کے سبب یہ بچہ بے ہوش ہوکرگر پڑا۔ جب اس بچیّ کو ہوش آیا تو اس نے شہر کے بھاگیہ نگر پولیس اسٹیشن میں ان دو اساتذہ کی کرتوتوں کے خلاف میں تمام ترتفصیلات بیان کردی۔ بعد ازاں چائلڈ ایکٹ 1986کی دفعہ 41کے تحت معاملہ درج کرلیا گیا۔مزید تحقیقات سب انسپکٹر سوریہ تلے کررہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT