Sunday , July 22 2018
Home / Top Stories / ’ناکام‘ مودی حکومت عوامی برہمی سے بچنے کوشاں، کانگریس نشانہ

’ناکام‘ مودی حکومت عوامی برہمی سے بچنے کوشاں، کانگریس نشانہ

کئی اپوزیشن قائدین کے خلاف جھوٹے مقدمات ، سی بی آئی و دیگر ایجنسیاں حکومت کی کٹھ پتلی۔ کانگریس لیڈر سرجیوالا کا دعویٰ

نئی دہلی 3 فروری (سیاست ڈاٹ کام) کانگریس نے آج الزام عائد کیاکہ مودی حکومت سیاسی حریفوں کو جھوٹے مقدمات میں پھنساتے ہوئے نشانہ بنارہی ہے تاکہ عوام کی توجہ حکمرانی کی ناکامی سے ہٹائی جاسکے۔ سی بی آئی نے گزشتہ روز ہی پارٹی لیڈر بھوپیندر سنگھ ہوڈا کے خلاف کرپشن کیس میں چارج شیٹ پیش کی ہے۔ کانگریس کمیونکیشنس انچارج رندیپ سرجیوالا نے کہاکہ پارٹی اِس طرح کے سیاسی انتقام والی کارروائیوں سے خوف نہیں کھائے گی جو مودی حکومت اِس کے لیڈروں کے خلاف کررہی ہے۔ حکومت چاہتی ہے کہ 2019 ء کے لوک سبھا چناؤ سے قبل خود کو عوامی برہمی سے بچایا جاسکے۔ سرجیوالا نے بوفورس کیس کی مثال پیش کی اور الزام عائد کیاکہ بی جے پی زیرقیادت مرکزی حکومت کانگریس کو بدنام کرنے کے لئے اِس مسئلہ کو زندہ رکھ رہی ہے۔ سی بی آئی نے گزشتہ روز سپریم کورٹ میں ایک پٹیشن داخل کرتے ہوئے دہلی ہائیکورٹ کے 2005 ء کے حکمنامے کے جواز کو چیلنج کیا ہے۔ ہائیکورٹ نے سیاسی طور پر حساس نوعیت کے بوفورس رشوت خوری کیس میں ملزم اشخاص کے خلاف تمام الزامات کالعدم کردیئے تھے۔ سرجیوالا نے دعویٰ کیاکہ ایسی کارروائی مفلوج حکمرانی سے توجہ ہٹانے کے مقصد سے ہی کی جارہی ہے اور مودی حکومت کی رچی گئی سازش کا حصہ ہے جس میں بی جے پی قیادت اپنے سیاسی مفادات کی تکمیل کرنا چاہتی ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ مودی حکومت کانگریس قائدین کو جھوٹے مقدمات میں پھنساتے ہوئے سیاسی انتقام لے رہی ہے۔ چونکہ حکومت کا سیاسی گراف نیچے آرہا ہے، اس لئے وہ کانگریس قائدین کو بے بنیاد اور جھوٹے کیسوں میں ماخوذ کرنے کے لئے سی بی آئی اور دیگر ایجنسیوں کو استعمال کررہی ہے۔ سرجیوالا نے یہاں میڈیا سے بات چیت میں کہاکہ کانگریس قائدین حکومت کے ایسے رویے کے باوجود کوئی خوف نہیں کھائیں گے اور اِن سازشوں اور جھوٹے فوجداری مقدمات کا پوری شدت کے ساتھ مقابلہ کریں گے۔ سابق چیف منسٹر ہریانہ ہوڈا اور 33 دیگر افراد کو گزشتہ روز سی بی آئی نے کرپشن کے ایک کیس میں ماخوذ کیا ہے۔ یہ معاملہ زائداز 1500 کروڑ روپئے مالیت کی مانیسر اراضی معاملتوں سے متعلق ہے جس میں تقریباً 200 کسانوں سے دھوکہ دہی ہوئی۔ سرجیوالا نے حکومت ہریانہ کو نشانہ بناتے ہوئے الزام عائد کیاکہ ان کیسوں کو ہریانہ میں ریاستی حکومت کی مکمل ناکامی سے توجہ ہٹانے کے لئے ایک منصوبہ کے طور پر استعمال کیا جارہا ہے۔ ہریانہ میں لاء اینڈ آرڈر پوری طرح مفلوج ہے اور نراج کی کیفیت پائی جاتی ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ کئی کانگریس قائدین جیسے بھوپندر ہوڈا، ویر بھدرا سنگھ، اشوک گہلوٹ، سچن پائلیٹ اور پی چدمبرم اور اُن کی فیملی، اشوک چوان، شیلا ڈکشٹ اور ہریش راوت کو بھی جھوٹے مقدمات میں پھانسا گیا ہے۔ کانگریس لیڈر نے کہاکہ ملک میں مودی حکومت کے خلاف عمومی طور پر برہمی کا ماحول ہے۔ چنانچہ حکومت اپوزیشن کی آواز کو دبادینا چاہتی ہے۔ جس کے لئے وہ سی بی آئی جیسے اداروں کو کٹھ پتلی کے طور پر استعمال کررہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT